کراچی: تین بم دھماکوں میں 15 افراد زخمی

رینجرز تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بدھ کو بھی کراچی میں تین بم حملوں میں رینجرز اہلکاروں سمیت چار افراد ہلاک ہوئے

پاکستان کے سب سے بڑے شہرکراچی میں تین بم دھماکوں کے نتیجے میں 15 افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں سے ایک کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔

پاکستان کے سرکاری ٹیلی وژن کے مطابق کراچی کے علاقے قصبہ کالونی میں ایک گھر کے باہر تین بم دھماکے ہوئے جن کی شدت کم تھی۔یہ واقعہ بدھ اور جعمرات کی درمیانی شب پیش آیا۔

ان بم دھماکوں میں بظاہر عوامی نیشنل پارٹی کے ایک مقامی کارکن کے گھر نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں 15 افراد زخمی ہوئے جن میں سے ایک کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔

’کراچی میں امن کی بحالی تک آپریشن جاری رہے گا‘

اے این پی کے کارکن اس واقعے میں زخمی ہوئے لیکن ان کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق دو دھماکے پہلے ہوئے اور جب ریسکیو عملہ جائے وقعہ پر پہنچا تو تیسرا دھماکا ہوا جس سے ایمبولینسوں کو بھی نقصان پہنچا۔

واقعے کے بعد سکیورٹی اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے کر کارروائی شروع کر دی۔

امدادی کارکنوں نے زخمیوں کو عباسی شہید ہسپتال منتقل کر دیا۔

خیال رہے کہ کراچی ٹارکلنگ، بم دھماکوں، خودکش حملوں اور فائرنگ کے واقعات کی زد میں ہے۔

بدھ کو بھی کراچی کےعلاقے نارتھ ناظم آباد میں واقع سچل رینجرز کے ہیڈ کواٹرز پر ہونے والے خودکُش حملے میں دو رینجرز اہلکاروں سمیت تین افراد ہلاک اور چھ زخمی ہوئے تھے۔

اس سے پہلے بدھ کی صبح ہی کراچی کے علاقے ناظم آباد ہی میں میٹرک بورڈ آفس کے قرید موجود رینجرز کی ایک چوکی قریب دس منٹ کے وقفے سے دو دھماکے ہوئے جس سے ایک شخص ہلاک اور پانچ زخمی ہوگئے۔

یہ واقعات ایسے وقت میں ہوئے ہیں جب کراچی میں دہشت گردوں اور جرائم پیشہ افرادکے خلاف ایک ٹارگٹڈ آپریشن گزشتہ کئی ماہ سے جاری ہے جس میں رینجرز اور پولیس حکام نے کئی ملزمان کو گرفتا کرنے کا دعوٰی کیا ہے۔

اسی بارے میں