پشاور: سینیما گھر میں دستی بم دھماکے، پانچ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption تحقیقات کی جا رہی ہیں کہ حملہ آور دستی بم سینیما کے اندر لانے میں کیسے کامیاب ہوا

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں پولیس کا کہنا ہے کہ ایک سینیما گھر میں دھماکوں کے نتیجے میں پانچ افراد ہلاک اور 20 زخمی ہوگئے ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ دھماکے اتوار کی شام پشاور کے کابلی پولیس سٹیشن کی حدود میں واقع ایک سینیما گھر میں ہوئے۔ یہ سینیما مشہور بازار قصہ خوانی بازار کے قریب واقع ہے۔

ایس پی سٹی فیصل مختار نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سینیما کے اندر دستی بموں سے دو حملے کیے گئے ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ جس وقت دستی بم پھینکےگئے اس وقت سینیما میں 90 کے قریب افراد موجود تھے۔

ایس پی سٹی کا کہنا تھا کہ ان کے پاس خفیہ اطلاعات تھیں کہ شدت پسند سینیماگھروں کو نشانہ بنا سکتے ہیں: ’ہم نے تمام سینیما گھروں کے مالکان کو متنبہ کیا تھا کہ حملے کی رپورٹیں ہیں اور وہ سکیورٹی کو مزید سخت کریں۔‘

ایس پی سٹی نے مزید کہا کہ کچھ عرصے قبل سینیما گھروں کے چوکیداروں کو تربیت دی گئی تھی کہ چیکنگ کیسے کرنی چاہیے۔

انھوں نے کہا کہ تحقیقات کی جا رہی ہیں کہ حملہ آور کیسے دستی بم سینیما کے اندر لانے میں کامیاب ہوا۔

دھماکے کے فوراً بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

پشاور میں اس سے پہلے بھی شدت پسندی کے متعدد واقعات میں عام شہریوں اور سکیورٹی حکام کو نشانہ بنایا جا چکا ہے۔

اسی بارے میں