خفیہ ایجنسیاں کریم خان کو اگلی سماعت پر پیش کریں: لاہور ہائی کورٹ

Image caption عدالت نے وزارتِ داخلہ کے ذریعے خفیہ ایجنسیوں کو کریم خان کو بیس فروری کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے

لاہور ہائی کورٹ کے راولپنڈی بینچ نے لاپتہ صحافی اور کارکن کریم خان کو 20 فروری کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

کریم خان کو پانچ فروری کو تقریباً 20 نامعلوم مسلح افراد نے ان کے گھر سے اغوا کیا تھا۔ کریم خان کے خاندان کا کہنا ہے کہ ان میں سے بعض نے پولیس یونیفارم پہنی ہوئی تھی۔

کریم خان کے وکیل شہزاد اکبر نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ بدھ کے روز عدالت میں تھانہ نصیرآباد کے ایک پولیس اہلکار نے عدالت کو کریم خان کی گمشدگی کی ایف آئی آر پیش کی، جس میں کہا گیا ہے کہ نامعلوم افراد کے پاس پولیس کی گاڑیاں بھی تھیں۔

کریم خان کے وکیل کے بقول اہلکار نے عدالت کو بتایا کہ کریم ان کی تحویل میں نہیں ہیں۔

اس پر شہزاد اکبر نے شک کا اظہار کیا کہ کریم خان کو خفیہ ایجنسیوں نے اٹھایا ہے۔ عدالت نے وزارتِ داخلہ کے ذریعے خفیہ ایجنسیوں کو کریم خان کو 20 فروری کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا۔

واضح رہے کہ کریم خان ڈرون حملوں کے خلاف 15 فروری کو برطانوی، جرمن اور ولندیزی ارکانِ پارلیمان سے بات کرنے جا رہے تھے۔ دسمبر 2009 میں کریم خان کے ایک بیٹے اور بھائی شمالی وزیرستان میں ڈرون حملے میں مارے گئے تھے اور انہوں نے 2010 میں امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔ کریم خان نے حکومتِ پاکستان کے خلاف بھی اپنے بھائی اور بیٹے کی ہلاکت کی تحقیق نہ کرنے پر قانونی کارروائی شروع کی تھی۔

انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی بین الاقوامی تنظیم ایمنیسٹی انٹرنیشنل کی ایک اہلکار ایشیا پیسیفک کی ڈپٹی ڈائریکٹر ازابیل ایرڈن نے کریم خان کی گمشدگی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’ہمیں ڈر ہے کہ انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے معروف کارکن کریم خان کو ڈرون حملوں کے خلاف بیرونِ ملک گواہی دینے سے روکنے کے لیے لاپتہ کیا گیا ہے۔‘

انہوں نے مزید کہا کہ ’اس واقعے سے پاکستان میں انسانی حقوق کی پامالیوں کے خلاف آواز اٹھانے والے کارکنوں کو نشانہ بنانے کا رجحان نظر آتا ہے‘ اور ڈرون پروگرام میں پاکستان کی ممکنہ شرکت پر بھی تشویش کا اظہار کیا۔

خیال رہے کہ کریم خان کے خاندان کے مطابق رات ساڑھے بارہ بجے راولپنڈی میں کریم خان، ان کے چھ بچے، بیگم اور بوڑھےچچا سو رہے تھے کہ اچانک ان کے دروازے پر کسی نے دستک دی جب دروازہ نہیں کھلا نہیں تو باہر سے تالا توڑ کر تقریباً بیس مسلح افراد گھر میں داخل ہو گئے اور کریم خان کو اپنے ساتھ لے گئے۔

اسی بارے میں