لاہور:ایک ہی خاندان کے آٹھ افراد کا قتل

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پولیس کی فورنزک ٹیم شواہد اکھٹے کر رہی ہے

لاہور کی پولیس کے مطابق جوہر ٹاؤن کے علاقے میں ایک ہی خاندان کے آٹھ افراد کو قتل کر دیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں تین بھائی، دو خواتین اور تین بچے شامل ہیں۔

حکام کے مطابق بظاہر یہ واقعہ پیر کی شب پیش آیا ہے اور لاشیں منگل کو ملیں جنھیں پوسٹ مارٹم کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

سی سی پی او لاہور شفیق گجر نے جائے وقوعہ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آٹھ افراد کو کند آلے سے قتل کیا گیا اور لاشوں کے قریب سے سفید رنگ کا سفوف بھی ملا ہے۔

ان کا کہنا تھا ’جس بے دردی سے قتل ہوئے اس سے لگتا ہے کہ یہ انتقامی کارروائی ہے۔‘

شفیق گجر نے مزید بتایا کہ فورنزک ٹیم شواہد اکھٹے کر رہی ہے۔ انھوں نے بتایا کہ سفوف کے ذرات لاشوں کے چہروں پر بھی لگے ہیں جن کی جانچ کے لیے انھیں فورنزک لیب میں بھیج دیا گیا ہے۔

پولیس افسر کے مطابق مذکورہ مکان میں تین بھائی اپنے اہلِ خانہ کے ہمراہ رہتے تھے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ جہانیاں سے تعلق رکھنے والے اس خاندان میں کل 7 بھائی ہیں، جن میں سے تین اس مکان میں رہتے تھے اور دو بھائی شادی شدہ تھے۔ واقعے کے وقت ان دونوں کی اہلیائیں اور 3 بچے بھی موجود تھے جنھیں قتل کیا گیا۔

نامہ نگار علی سلمان کے مطابق ہلاک شدگان میں سے ایک بھائی استاد تھا جبکہ دوسرا سرکاری سطح پرسڑکوں کی تعمیر کے ٹھیکے لیتا تھا۔

پولیس کے بقول مقتولین کے بھائی شبیر کا کہنا ہے کہ ان کی کسی سے کوئی ذاتی دشمنی نھیں چل رہی تھی تاہم پولیس کہتی ہے کہ ایک مقتول جو کہ ٹھیکیداری کرتا تھا، لین دین کے تنازعات میں گرفتار بھی ہو چکا ہے۔

اسی بارے میں