کوہاٹ: پولیس لائن کے قریب دھماکہ، 10 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکہ ٹائم بم سے کیا گیا

پاکستان کے صوبہ خیبر کے ضلع کوہاٹ میں پولیس لائن کے قریب ہونے والے دھماکے میں کم سے کم 10 افراد ہلاک اور 17 زخمی ہوگئے ہیں۔

دھماکہ کوہاٹ میں پولیس لائن کے قریب واقع پشاور چوک پر ہوا۔

جس جگہ دھماکہ ہوا ہے وہ کوہاٹ کا مصروف ترین مقام ہے اور یہاں سے زیادہ تر گاڑیاں ہنگو جاتی ہیں۔

دھماکے کے وقت بھی مختلف علاقوں کو جانے والی گاڑیاں یہاں سے گزر رہی تھیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکہ ٹائم بم سے کیا گیا تاہم ابھی تک یہ واضح نہیں ہوا ہے کہ حملے میں کسے نشانہ بنایا گیا۔

پولیس کے مطابق دھماکے میں زخمی اور ہلاک ہونے والوں کی لاشیں ڈسٹرکٹ ہسپتال پہنچا دی گئی ہیں۔

سکیورٹی فورسز نے دھماکے کی جگہ کو گھیرے میں لے لیا اور امدادی کارروائیاں اور تحقیقات شروع کر دی گئیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption کوہاٹ اور اس کے متصل ضلعے ہنگو کو شیعہ سنی کشیدگی کے سلسلے میں حساس علاقہ تصور کیا جاتا ہے

سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق وزیرِاعظم نواز شریف نے واقعے کی مذمت کی ہے۔

خیال رہے کہ کوہاٹ اور اس کے متصل ضلع ہنگو کو شیعہ سنی کشیدگی کے سلسلے میں حساس علاقہ تصور کیا جاتا ہے۔

گذشتہ سال نومبر میں کوہاٹ شہر میں سنی مسلک سے تعلق رکھنے والے افراد پر ایک امام بارگاہ کے قریب فائرنگ کے نتیجے میں دو افراد ہلاک اور تین زخمی ہوئے تھے۔ سنی مسلک کے مسلمانوں نے راولپنڈی میں دس محرم کو ہونے والے فرقہ وارانہ تشدد کے خلاف جلوس نکالا تھا۔

نومبر میں فرقہ وارانہ کشیدگی بڑھنے کے خطرے کے پیشِ نظر حکام نے ہنگو اور کوہاٹ کے مختلف علاقوں میں کچھ وقت کے لیے کرفیو نافذ کیا تھا جسے بعد میں ہٹا لیا گیا۔

خیال رہے کہ محرم الحرام سے پہلے خیبر پختونخوا میں جن چار اضلاع کو انتہائی حساس قرار دیا گیا تھا ان میں کوہاٹ بھی شامل تھا۔

دیگر حساس اضلاع میں پشاور، ڈیرہ اسماعیل خان اور ہنگو شامل تھے۔

اسی بارے میں