پاکستان: 67 لاکھ افراد نشے کے عادی

تصویر کے کاپی رائٹ UNODC
Image caption سروے رپورٹ کے اندازے کے مطابق پاکستان میں گذشتہ ایک سال کے دوران 67 لاکھ بالغ افراد نے منشیات کا استعمال کیا

اقوامِ متحدہ کے ادارہ برائے منشیات اور جرائم نے پاکستان میں منشیات کے استعمال سے حوالے سے ایک سروے رپورٹ شائع کی ہے۔

اسلام آباد میں منگل کو شائع کی جانے والی سروے رپورٹ کے مطابق پاکستان میں 15 سے 64 سال کی عمر کے افراد پر مشتمل آبادی منشیات کے تباہ کن نتائج سے متاثر ہو رہی ہے۔

سروے رپورٹ کے اندازے کے مطابق پاکستان میں گذشتہ ایک سال کے دوران 67 لاکھ بالغ افراد نے منشیات کا استعمال کیا۔

پاکستان میں 42 لاکھ سے زائد افراد کے بارے میں خیال ہے کہ وہ نشے کے عادی ہیں لیکن ان میں سے 30 ہزار سے بھی کم افراد کے لیے علاج اور طبی سہولیات میسر ہیں۔ اس کے علاوہ ان افراد کے لیے باقاعدہ علاج مفت نہیں ہے۔

ایک ایسا ملک جس میں ایک اندازے کے مطابق کل آبادی کے تین چوتھائی افراد ایک دن میں 1.25 امریکی ڈالر سے کم پر زندگی گزارتے ہیں ان کے لیے منشیات کا علاج کروانا غیر معمولی طور پر مہنگا ہے۔

نارکوٹکس کنٹرول ڈویژن کے سیکریٹری اکبر خان ہوتی نے سروے رپورٹ کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں منشیات کا استعمال ایک اہم مسئلہ ہے جو معاشرے کے ہر طبقے کو متاثر کر رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت خصوصاً نوجوانوں میں منشیات کے استعمال سے پیدا ہونے والے خطرے کو ختم کرنے کے لیے پر عزم ہے۔

اقوامِ متحدہ کے ادارے برائے منشیات اور جرائم کے نمائندے سنیررگویڈز کا کہنا تھا کہ خطے میں قومی منشیات سروے سنہ 2013 پہلی بار کیا گیا اور اس میں منشیات کے استعمال اور ایچ آئی وی کے بارے میں مفصل ڈیٹا فراہم کیا گیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ اس رپورٹ میں فراہم کیے جانے والے ڈیٹا کی مدد سے مستقبل میں پاکستان میں منشیات کےاستعمال کو کم کرنے کے ساتھ ساتھ اس کے علاج میں بھی مدد ملے گی۔

پاکستان میں بھنگ کا استعمال بہت عام ہے۔ ایک اندازے کے مطابق پاکستان کی کل آبادی کا 3.6 فیصد بالغ طبقہ بھنگ استعمال کرتا ہے۔

اس کے علاوہ پاکستان میں آٹھ لاکھ 60 ہزار افراد افیون اور ہیروئن استمعال کرتے ہیں۔

پاکستان میں افیون اور ہیروئن کے استعمال کی شرح صوبوں میں زیادہ ہے۔

پاکستان میں مرد اور خواتین دونوں منشیات کا استعمال کرتے ہیں۔ مردوں میں بھنگ اور خواب آور ادویات کی شرح زیادہ ہے جب کہ خواتین سکون فراہم کرنے والی ادویات بھی استعمال کرتی ہیں۔

سروے رپورٹ کے مطابق پاکستان میں 16 لاکھ افراد ادویات کو بطور نشہ استعمال کرتے ہیں اور خواتین میں اس کی شرح زیادہ ہے۔

پاکستان میں منشیات کے استعمال کی سروے رپورٹ نارکوٹکس کنٹرول ڈویژن پاکستان بیورو آف شماریات اور اقوامِ متحدہ کے ادارے برائے منشیات اور جرائم کے تعاون سے جاری کی گئی۔

اسی بارے میں