ہنگو: دھماکے میں چار سرکاری افسران زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پولیس کے مطابق دھماکہ ریموٹ کنٹرول کے ذریعے کیا گیا

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع ہنگو میں پولیٹکل ایجنٹ کرم ایجنسی کی گاڑی کے قریب دھماکے میں چار افسران معمولی زخمی ہو گئے۔

پولیٹکل انتظامیہ کے مطابق جمعرات کی صبح پولیٹکل ایجنٹ کرم ایجنسی ریاض محسود دو اسسٹسنٹ پولیٹکل ایجنٹ اور ایک تحصیل دار اجلاس میں شرکت کے لیے تحصیل ٹل جا رہے تھے۔

انتظامیہ کے مطابق تورغر کے مقام پر نامعلوم افراد نے سڑک کے کنارے دھماکہ خیز مواد نصب کر رکھا تھا۔

مقامی پولیس اہلکاروں کے مطابق دھماکہ ریموٹ کنٹرول کے ذریعے کیا گیا اور اس کے نتیجے میں چاروں سرکاری اہلکار معمولی زخمی ہو گئے۔ زخمیوں کو تحصیل ٹل کے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

تورغر ضلع ہنگو کی تحصیل ٹل میں واقع ہے اور یہ قبائلی علاقے کرم ایجنسی کی سرحد کے قریب واقع ہے۔

اس حملے کی ذمہ داری تاحال کسی تنظیم نے قبول نہیں کی ہے۔ پیر کو اسلام آباد کی کچہری میں حملے کی ذمہ داری ایک نئی تنظیم نے قبول کی تھی جبکہ اسلام آباد حملے سمیت تمام واقعات سے کالعدم تنظیم تحریک طالبان پاکستان نے لاتعلقی کا اعلان کیا تھا۔

گذشتہ روز سکیورٹی فورسز کا قافلہ وسطی کرم کی جانب جا رہا تھا کہ سڑک کے کنارے نصب بم کے پھٹنے کے نتیجے میں چھ اہلکار ہلاک ہو گئے تھے۔

کالعدم تحریک طالبان پاکستان کی کی جانب سے جنگ بندی کے اعلان اور حکومت کی طرف سے شدت پسندوں کے خلاف کارروائیاں روکنے کے باوجود تشدد کے واقعات معمول سے پیش آرہے ہیں۔

طالبان اور حکومت کے درمیان مذاکرات کے لیے قائم کمیٹیوں نے تشدد کے ان واقعات پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔

اسی بارے میں