تیراہ: 100 افراد اغوا، طالبان نے 93 مغوی رہا کردیے

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption اتوار کو تیراہ کے پولیٹیکل نائب تحصیلدار فوج کی 207 بریگیڈ کے افسران کے ہمراہ قمبر خیل قبیلے کے رہنماؤں سے ملنے علاقے میں جائیں گے

پاکستان کے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی کی پولیٹیکل انتظامیہ کا کہنا ہے کہ کالعدم تحریک طالبان نے باڑہ سب ڈویژن کے علاقے تیراہ سے برقمبر خیل قبیلے کے ایک سو افراد کو اغوا کیا تھا تاہم ترانوے مغویوں کو رہا کر دیا گیا ہے۔

پولیٹیکل انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ یہ واقعہ سنیچر کو باڑہ سب ڈویژن کے علاقے تیراہ میں حیدر کنڈو کے مقام پر پیش آیا۔

انتظامیہ کے مطابق جس علاقے میں یہ واقعہ پیش آیا ہے اس علاقے میں پاکستانی سکیورٹی فورسز کی عملداری نہیں ہے۔

اہلکار نے بتایا کہ ہفتے کو طالبان نے 100 افراد کو اغوا کیا تھا تاہم بعد میں ان میں سے 93 افراد کو رہا کردیا۔ انتظامیہ کے بقول اب سات افراد طالبان کی قید میں ہیں۔

خیبر ایجنسی کی انتظامیہ کے اہلکار نے مزید بتایا کہ اتوار کو تیراہ کے پولیٹیکل نائب تحصیلدار فوج کی 207 بریگیڈ کے افسران کے ہمراہ قمبر خیل قبیلے کے رہنماؤں سے ملنے علاقے میں جائیں گے۔

پولیٹیکل انتظامیہ کے اہلکار کے مطابق دوپہر کے وقت پیش آنے والے اس واقعے کی اطلاع رات نو بجے کے قریب پہنچی کیونکہ مواصلاتی رابطے نہ ہونے کی وجہ سے اطلاعات کی رسائی میں مشکلات اور سست روی پیش آتی ہے۔

تاہم پولیٹیکل انتظامیہ کے مطابق گذشتہ ایک سال کے دوران اتنے بڑے پیمانے پر اغوا کا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا ہے۔

اسی بارے میں