جناح کراچی میں پیدا ہوئے یا ٹھٹھہ میں؟

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption محمد علی جناح 25 دسمبر سال 1876 میں پیدا ہوئے تھے

بانیِ پاکستان محمد علی جناح کراچی میں پیدا ہوئے یا ٹھٹھہ کے علاقے جھرک میں؟

صوبہ سندھ کی اسمبلی میں منگل کو اس معاملے پر بحث ہوئی لیکن پیدائش کے 138 سال کے بعد شروع ہونے والی یہ تکرار کسی منطقی نتیجے پر نہیں پہنچ سکی۔

متحدہ قومی موومنٹ کے پارلیمانی رہنما سید سردار احمد نے نکتۂ اعتراض پر ایک سرٹیفیکیٹ ایوان میں پیش کیا جس کے مطابق محمد علی جناح کی پیدائش کراچی میں ہوئی تھی۔

سندھ کے سابق سینیئر بیوروکریٹ سید سردار احمد نے غلام علی الانا کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ انھوں نے لکھا تھا کہ محمد علی جناح اس دھرتی پر پیدا نہیں ہوئے، اور اس کے علاوہ کئی تحریروں میں کہا گیا ہے کہ جناح کراچی میں نہیں بلکہ جھرک میں پیدا ہوئے تھے، لیکن ان کے پاس جو سرٹیفیکیٹ ہے اس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ ان کی پیدائش کراچی میں ہی ہوئی تھی۔

سید سردار احمد نے محمد علی جناح کی 25 اگست 1947 کی تقریر کا بھی حوالہ دیا اور کہا کہ جناح نے خود کہا تھا کہ ان کی پیدائش کراچی میں ہوئی ہے، لہذٰا اب یہ بحث ختم ہونی چاہیے۔

انھوں نے ایوان کو بتایا کہ اس وقت کراچی ڈسٹرکٹ سہون تک پھیلا ہوا تھا جبکہ جھرک کراچی کی ایک تحصیل تھی، اگر اس بات کو نہیں تسلیم کیا جاتا تو اس کا مطلب یہ ہوا ہے کہ ہم محمد علی جناح کے بیان کی مخالفت کر رہے ہیں۔

سینیئر صوبائی وزیر نثار کھوڑو کا کہنا تھا کہ یہ تاریخی ریکارڈ ہے کہ محمد علی جناح کی پیدائش جھرک میں ہوئی تھی۔ ان کے مطابق ہو سکتا ہے کہ جھرک اس وقت کراچی کا حصہ ہو۔ انھوں نے تجویز پیش کی کہ ایوان کی ایک کمیٹی بنائی جائے جو ریکارڈ کا جائزہ لے کر بتائے کہ جناح کی پیدائش کہاں ہوئی۔

صوبائی وزیر سکندر مندھرو نے ایوان کو بتایا کہ جناح نے سندھ مدرسۃ اسلام میں دو جماعت تعلیم حاصل کی، اس کے بعد وہ ممبئی اور وہاں سے لندن چلے گئے، جہاں انھوں نے اپنا نام تبدیل کر دیا، یہ سب کچھ ریکارڈ کا حصہ ہے۔

سندھ کے محکمۂ ثقافت کی وزیر شرمیلا فاروقی کا کہنا تھا کہ سندھ کے نامور محقق ڈاکٹر نبی بخش بلوچ نے بھی اس پر تحقیق کی ہے اور ان کے محکمے کے پاس اس کا مواد دستیاب ہے، جو وہ ایوان کو فراہم کر سکتی ہیں۔

سید سردار احمد نے کمیٹی کی تشکیل سے اتفاق نہیں کیا اور کہا کہ بات واضح ہے کہ کمیٹی بنانے کی ضرورت نہیں، اس طرح یہ بحث کسی نقطے پر پہنچے بغیر عارضی طور پر موخر ہو گئی۔

یاد رہے کہ سندھ کے سرکاری نصاب میں برسوں سے طالب علموں کو یہ پڑھایا گیا کہ محمد علی جناح کی پیدائش ٹھٹھہ کے علاقے جھرک میں 25 دسمبر 1876 کو ہوئی تھی۔

دوسری جانب سندھ اسمبلی میں متحدہ قومی موومنٹ نے کارکنوں کی مبینہ طور پر ماورائے عدالت ہلاکت کے خلاف مذمتی قرار داد پیش کرنا چاہی لیکن سپیکر نے انھیں اجازت نہیں دی جس پر ایم کیو ایم کے اراکین نے احتجاج کیا اور ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں۔

احتجاج کے دوران تحریک انصاف کے رکن خرم شیر زماں کی ایک قرارداد منظور کر لی گئی، جس میں الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ بلدیاتی اور عام انتخابات بائیو میٹرک نظام کے تحت منعقد کیے جائیں۔

اسی بارے میں