پرویز مشرف کراچی پہنچ گئے

تصویر کے کاپی رائٹ f
Image caption سابق فوجی صدر کے ساتھ اُن کی سکیورٹی پر تعینات عملہ بھی ہے

سابق فوجی صدر پرویز مشرف خصوصی طیارے کے ذریعے کراچی پہنچے ہیں جہاں پر وہ ایک ہفتے سے زائد قیام کریں گے۔

وہ سنیچر کی شب ایک دوست کے نجی طیارے کے ذریعے کراچی روانہ ہوئے۔

سابق فوجی صدر کے ساتھ اُن کی سکیورٹی پر تعینات عملہ بھی ہے۔

پرویز مشرف کی ایئرپورٹ روانگی کے لیے اسلام آباد پولیس نے دو مختلف روٹس لگانے کے علاوہ سخت حفاظتی اقدامات کیے تھے۔

سابق فوجی صدر کی سکیورٹی کی ذمہ داری رینجرز کے سپرد کی گئی ہے۔

ساق فوجی صدر کی وکلا ٹیم میں شامل فیصل چوہدری نے بی بی سی کو بتایا کہ کراچی روانگی سے قبل انھوں نے اپنے وکلا سے ملاقات کی جس میں انھوں نے کہا کہ وہ فیملی مصروفیات کی وجہ سے کراچی جا رہے ہیں اس کے علاوہ وہ وہاں پر اپنے معالج کو اپنا چیک اپ بھی کروائیں گے کیونکہ ان دنوں ان کی کمر میں تکلیف ہے۔

فیصل چوہدری کے بقول پرویز مشرف ایک ہفتہ کراچی میں رہیں گے جس کے بعد وہ واپس آجائیں گے۔

سابق فوجی صدر کےگذشتہ برس پاکستان آنے کے بعد پہلی مرتبہ کراچی گئے ہیں جبکہ انھوں نے زیادہ عرصہ اسلام آباد میں ہی قیام کیا ہے۔

یاد رہے کہ کوئٹہ کی انسدادِ دہشت گردی کی عدالت نے بلوچستان کے سابق وزیر اعلیٰ نواب اکبر بگٹی کے قتل کے مقدمے میں اگلے ہفتے پرویز مشرف کو اصالتاً عدالت میں پیش ہونے کا حکم جاری کر رکھا ہے۔

عدالت کا کہنا ہے کہ عدالت میں پیش نہ ہونے کی صورت میں ان کی ضمانت منسوخ کرکے ان کی گرفتاری کے لیے وارنٹ بھی جاری کیے جاسکتے ہیں۔

سابق فوجی صدر کے خلاف غداری کے مقدمے کی سماعت بھی 24 اپریل کو اسلام آباد میں ہوگی جہاں پر اس مقدمے میں گواہوں کے بیانات قلمبند کرنے کا مرحلہ شروع کیا جائے گا۔

اسلام آباد پولیس کے ذرائع کے مطابق پرویز مشرف کی کراچی روانگی کے بعد بھی چک شہزاد میں واقع ان کے فارم ہاؤس پر لگائی گی سکیورٹی میں کوئی کمی نہیں کی گئی ہے۔

اسی بارے میں