رحیم یار خان: پٹڑی پر دھماکہ، دو زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پاکستان میں اس سال کے آغاز سے ہی ٹرینوں کو کم طاقت کے بموں کا نشانہ بنانے کے واقعات پیش آ رہے ہیں

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے ضلع رحیم یار خان میں ریل کی پٹڑی پر دھماکے سے مسافر ٹرین کے انجن کو نقصان پہنچا ہے اور اس میں سوار ڈرائیور سمیت دو اہلکار زخمی ہو گئے ہیں۔

یہ واقعہ رحیم یار خان کے ریلوے سٹیشن کے نزدیک اتوار اور پیر کی شب اس وقت پیش آیا جب ملتان سے کراچی جانے والی زکریا ایکسپریس وہاں سے گزر رہی تھی۔

دھماکے سے پٹڑی کو نقصان پہنچا اور وہاں کئی فٹ گہرا اور چوڑا گڑھا پڑ گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ یہ بظاہر ریموٹ کنٹرول بم تھا۔

دھماکے بعد اس ٹریک پر ریل گاڑیوں کی آمدورفت معطل ہوگئی جسے چار گھنٹے کی کوشش کے بعد بحال کر دیا گیا۔

بلوچ علیحدگی پسند تنظیم بلوچ ریپبلیکن آرمی کے ترجمان سرباز بلوچ نے بی بی سی کو فون کرکے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

پاکستان میں بلوچ علیحدگی پسند عناصر ریلوے، بجلی اور سوئی گیس کی تنصیبات کو اکثر نشانہ بناتے ہیں۔

رحیم یار خان میں ہی گذشتہ سال قدرتی گیس کی تین مرکزی پائپ لائنوں کو دھماکے سے اڑا دیا گیا تھا۔

پنجاب اور سندھ میں ٹرینوں، بجلی کے کھمبوں اور سوئی گیس کی پائپ لائنوں پر ایسے متعدد بم حملے ہو چکے ہیں جن کی ذمہ داری بلوچ علیحدگی پسند تنظیموں نے قبول کی تھی۔

اسی بارے میں