ایف بی آئی کے ایجنٹ کے خلاف مقدمہ ختم

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پولیس نے عدالت میں امریکی قونصل خانے کا خط بھی پیش کیا

کراچی کی ایک عدالت نے ایف بی آئی ایجنٹ جوئل کاکس پر دائر غیر قانونی اسلحے کا مقدمہ خارج کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

جوئل کو پہلے ہی اس مقدمے میں ضمانت پر رہا کر دیا گیا تھا۔

پیر کو ایئرپورٹ پولیس نے ملیر کی عدالت میں تفتیشی رپورٹ پیش کر کے مقدمہ خارج کرنے کی گزارش کی۔

پولیس کا موقف تھا کہ تحقیقات میں جوئل کاکس پر ال لیگل آرمز ایکٹ کے سیکشن 23 اے کا الزام ثابت نہیں ہوتا کیونکہ ان سے اسلحہ نہیں ملا اور صرف گولیاں اور میگزین برآمد کیا گیا ہے۔

پولیس نے عدالت میں امریکی قونصل خانے کا ایک خط بھی پیش کیا، جس میں کہا گیا ہے کہ جوئل کاکس ایف بی آئی کے لیے کام کرتے ہیں اور پاکستان پولیس ریفارمز پروگرام کے سلسلے میں آئے تھے۔

خط میں کہا گیا ہے کہ اس مشن سے وابستہ افراد کو اپنے دفاع کے لیے اسلحہ رکھنے کی اجازت حاصل ہے۔

پولیس کے مطابق اس موقف کی وزارت داخلہ نے بھی تصدیق کی ہے۔

اس پر جوڈیشل میجسٹریٹ نے پولیس کی درخواست قبول کر کے مقدمہ خارج کرنے کی منظوری دے دی۔

یاد رہے کہ ایف بی آئی ایجنٹ جوئل کوکس کو کراچی کے جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر نائن ایم ایم پستول کی 15 سے زائد گولیاں سمیت گرفتار کیا تھا۔

اسی بارے میں