خضدار:چیک پوسٹ پر فائرنگ سے آٹھ اہل کار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بلوچستان میں سابق فوجی صدر پرویز مشرف کے دور سے حالات زیادہ خراب ہیں

پاکستان کے صوبے بلوچستان کے ضلع خضدار کی تحصیل وڈھ میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے آٹھ لیویز اہل کار ہلاک ہو گئے ہیں۔

سیکریٹری داخلہ بلوچستان اکبر درانی نے بی بی سی کو بتایا کہ اتوار کی صبح نامعلوم مسلح افراد نے تحصیل وڈھ کے علاقے چوکر میں لیویز کی چیک پوسٹ پر حملہ کر دیا۔

خضدار شہر میں بڑھتی ہوئی لاقانونیت

سبی:انتخابی قافلے پر حملہ، 2 لیویز اہلکار ہلاک

سیکریٹری داخلہ کے مطابق فائرنگ سے آٹھ لیویز اہل کار ہلاک جبکہ ایک زخمی ہو گیا۔

انھوں نے کہا کہ زخمی اہل کار کو قریبی ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے اور جب ان کی حالت سنبھلے گی تو ان سے مزید معلومات حاصل کی جائیں گی۔

انھوں نے بتایا کہ واقعہ کے بعد پولیس کی نفری نے علاقے کی ناکہ بندی کرتے ہوئے حملہ آوروں کو گرفتار کرنے کے لیے کارروائی شروع کردی ہے۔

ایک مقامی انٹیلیجنس اہلکار نے حملے کی تصدیق کرتے ہوئے اے ایف پی کو بتایا کہ ابھی تک کسی گروپ نے اس واقعے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

واضح رہے کہ بلوچستان میں سابق فوجی صدر پرویز مشرف کے دور سے حالات زیادہ خراب ہیں اور ان میں شدت اس وقت آئی جب ایک مبینہ فوجی آپریشن میں بلوچ قوم پرست رہنما نواب اکبر بگٹی مارے گئے تھے۔

اس واقعے کے بعد سے صوبے میں مزاحمتی تحریک جاری ہے اور پرتشدد واقعات معمول بن گئے ہیں جن میں لوگوں کا لاپتہ ہونا اور اس کے بعد ان کی لاشوں کے ملنے کے واقعات نمایاں ہیں۔

یہ شہر اگرچہ کوئٹہ کو کراچی سے منسلک کرنے والی اہم آر سی ڈی شاہراہ پر واقع ہے لیکن اس میں ترقیاتی منصوبے کم ہی شروع کیے گئے ہیں۔

اسی بارے میں