باجوڑ ایجنسی میں حملے، دو اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption خیال رہے کہ باجوڑ ایجنسی کے پاک افغان سرحدی علاقوں میں گذشتہ چند دنوں کے دوران سکیورٹی فورسز پر حملوں میں تیزی دیکھنے میں آئی ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے باجوڑ ایجنسی میں سکیورٹی فورسز پر ہونے والے دو الگ الگ ریموٹ کنٹرول بم حملوں میں دو اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی طرف سے جاری ہونے والے ایک مختصر بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ واقعات سنیچر کو باجوڑ ایجنسی کے دور افتادہ پاک افغان سرحدی علاقوں میں پیش آئے۔

بیان کے مطابق سکیورٹی فورسز کو سڑک کے کنارے براہ کمررنگ اور ایک اور پاک افغان سرحدی علاقے میں نشانہ بنایا گیا جس میں دو اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں واقعات تحصیل نواگئی کے علاقوں ماموند چارمنگ میں ہوئے۔ ان کے مطابق سکیورٹی فورسز کے اہلکار پیدل گشت کر رہے تھے کہ اس دوران ان پر عسکریت پسندوں کی جانب سے حملہ کیا گیا۔

کالعدم تحریک طالبان پاکستان مہمند ایجنسی کے رہنما عمر خراسانی نے ان حملوں کی ذمہ داری قبول کی ہے اور کہا ہے کہ یہ سیکیورٹی فورسز کے ہاتھوں ان کے ساتھیوں کی ہلاکت کا ردِ عمل ہے۔

خیال رہے کہ باجوڑ ایجنسی کے پاک افغان سرحدی علاقوں میں گذشتہ چند دنوں کے دوران سکیورٹی فورسز پر حملوں میں تیزی دیکھنے میں آئی ہے۔

اس سے پہلے پاک افغان سرحدی علاقے میں پاکستانی چوکیوں پر سرحد پار سے شدت پسندوں کے حملے میں سات اہلکار ہلاک ہوگئے تھے۔ سکیورٹی ذرائع کے مطابق اب تک ہونے والے چار ایسے حملوں میں ایک درجن کے قریب سکیورٹی اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں۔

ادھر حکومت پاکستان نے بدھ کو سرحد پار سے ہونے والے حملے پر احتجاج کرتے ہوئے اس کی سخت الفاظ میں مذمت کی تھی۔

دفتر خارجہ کی طرف سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا تھا کہ ’پاکستان ان حملوں کی مذمت کرتا ہے اور یہ معاملہ کابل میں افعان حکومت اور اسلام آباد میں افعان سفات خانے کے ساتھ اٹھایا گیا ہے۔ بیان کے مطابق ’اس بات پر زور دیا گیا ہے کہ افغانستان اپنی سرزمین کو پاکستان کے خلاف استعمال ہونے سے روکنے کے لیے ٹھوس اقدامات کرے۔‘

ان حملوں کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے قبول کی گئی تھی۔طالبان کے ایک ترجمان نے بی بی سی کو ٹیلی فون کر کے بتایا تھا کہ پاکستانی سکیورٹی فورسز سرحدی علاقوں میں پیش قدمی کررہی تھی کہ اس دوران ان پر حملہ کیا گیا۔

اسی بارے میں