وزیرِستان سے بلوچستان آنے والوں کی چھان بین کرنے کا فیصلہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اجلاس میں کوئٹہ سمیت پورے صوبے میں سکیورٹی رسک کو کم سے کم کرنے کے حوالے سے سکیورٹی پلان کی از سر نوتشکیل اور مؤثر منصوبہ بندی اور حکمتِ عملی سے متعلق اہم فیصلے بھی کیے گئے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ وزیرستان آپریشن کے باعث یہاں نقل مکانی کرنے والوں کی مکمل چھان بین کی جائے گی۔ اس بات کا فیصلہ بدھ کو وزیر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کی زیر صدارت سیکورٹی خطرات کے پیش نظرامن و امان سے متعلق اعلیٰ سطحی اجلاس میں کیا گیا۔

اجلاس میں کراچی ایئرپورٹ پر حملے کے بعد پیدا شدہ سکیورٹی خطرات کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔

اجلاس کو بلوچستان کے تمام فضائی آڈوں، قومی و سرکاری تنصیبات، سول سیکریٹریٹ، گورنر سیکریٹریٹ، ریڈ زون، بلوچستان ہائی کورٹ، بلوچستان اسمبلی، دیگر سرکاری عمارتوں، ریلوے سٹیشنوں، عوامی مقامات کی سیکورٹی کا ازسر نو جائزہ لینے کے بعد کیے گئے اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔

اجلاس میں کوئٹہ سمیت پورے صوبے میں سکیورٹی رسک کو کم سے کم کرنے کے حوالے سے سکیورٹی پلان کی از سر نوتشکیل اور مؤثر منصوبہ بندی اور حکمتِ عملی سے متعلق اہم فیصلے بھی کیے گئے۔

کسی بھی ناخوشگوار واقعے یا حادثے کی صورت میں فوری امدادی کاروائی اور موجودہ انتظامات کے بارے میں بھی اجلاس کو بتایا گیا۔اجلاس میں طے پایا کہ سول سیکریٹریٹ میں بغیر سٹیکرز کے گاڑیوں کا داخلہ ممنوع ہو گا۔

ریڈ زون میں کسی بھی قسم کی گاڑیوں، موٹر سائیکل وغیرہ کی پارکنگ کی اجازت نہیں ہوگی۔

علاوہ ازیں بلوچستان اسمبلی میں وزراء ، اراکین اسمبلی سمیت کسی کو گاڑی پارکنگ کی اجازت نہیں دی جائے گی، اس ضمن میں متبادل پارکنگ کا بندوبست کیا جائے گا۔اسی طرح ایم پی اے ہاسٹل سے اسمبلی کے احاطے میں ہر عام و خاص کے داخلے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

اجلاس میں یہ بھی طے پایا کہ کوئی بھی شخصیت بغیر وردی کے سکیورٹی گارڈز نہیں رکھے گا اور تمام گارڈز کے مکمل کوائف رکھنے اور محکمۂ داخلہ میں باقاعدہ رجسٹریشن کرانا لازمی ہوگی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ کوئٹہ شہر کو امن و امان کے حوالے سے مختلف سیکٹرز میں تقسیم کر کے مؤثر اور جامعہ منصوبہ بندی کی گئی ہے۔

اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ تمام وزرا مشیران اور اراکین اسمبلی سمیت اہم سیاسی شخصیات کے ساتھ وزیر اعلیٰ سیکریٹریٹ آنے والے افراد کی شناخت لازمی ہوگی۔

اسی بارے میں