لورالائی میں فائرنگ سے پانچ ایف سی اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع لورالائی میں ایک چوکی پر مسلح افراد کی فائرنگ سے فرنٹیئر کانسٹیبلری کے پانچ اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں، جبکہ ایک زخمی ہے۔

ریڈیو پاکستان کے مطابق یہ واقعہ جمعرات کی صبح ضلع لورالائی کے علاقے دکی میں پیش آیا۔

پولیس ذرائع کے مطابق فائرنگ کے واقعے کے بعد پیراملٹری فورس کے اہلکاروں، پولیس اور لیویز کی بڑی تعداد موقعے پر پہنچ گئی۔

سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کر دیا۔

صوبہ بلوچستان میں عرصے سے سکیورٹی فورسز عسکریت پسندوں کے نشانہ پر رہی ہیں۔

گذشتہ اتوار کو کوئٹہ میں فائرنگ کے دو مختلف واقعات میں دو پولیس ارکان اور فرنٹیئر کانسٹیبلری کا ایک اہلکار ہلاک ہوا تھا۔ اسی طرح جنوری کے آخر میں ضلع آواران میں ایف سی اہلکاروں کے قافلے پر حملے میں کم سے کم تین اہلکار ہلاک اور چار زخمی ہوئے تھے۔

بلوچستان پولیس پر ایک بڑا حملہ گذشتہ سال اگست میں ہوا تھا جس میں اعلیٰ پولیس اہلکاروں سمیت 30 افراد ہلاک اور 40 زخمی ہو گئے تھے۔

یہ خودکش حملہ کوئٹہ کی پولیس لائن میں نمازِ جنازہ کے دوران کیا گیا تھا۔

اس وقت کے بلوچستان کے آئی جی احمد سکھیرا کے مطابق خودکش دھماکے میں پولیس کے اعلیٰ اہلکار ڈی آئی جی آپریشن فیاض احمد سنبل، ایس پی انور خلجی اور ڈی ایس پی شمس سمیت 30 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

یہ دھماکہ اس وقت ہوا تھا جب پولیس لائن میں ایک ایس ایچ او محب اللہ جان کی نماز جنازہ ادا کی جا رہی تھی۔ایس ایچ او محب اللہ جان ایک دن پہلے بدھ کو کوئٹہ میں ہی نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے ہلاک ہو گئے تھے۔

پولیس لائن میں نماز جنازہ کے وقت پولیس اہلکاروں کی بڑی تعداد شریک تھی جس کی وجہ سے ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر پولیس اہلکار تھے۔

اس حملے کی ذمہ داری کالعدم تحریکِ طالبان نے قبول کی تھی۔

اسی بارے میں