باجوڑ میں دھماکہ، تین خواتین سمیت چھ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption باجوڑ رقبے کے اعتبار سے سب سے چھوٹی قبائلی ایجنسی ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے باجوڑ ایجنسی میں ایک بم دھماکے میں کم از کم چھ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

مقامی انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ ہلاک شدگان میں تین خواتین اور دو بچیاں بھی شامل ہیں۔

اہلکار کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ منگل کی صبح تحصیل سالارزئی کے علاقے تنگی میں ہوا۔ ان کے مطابق بم سڑک کنارے نصب تھا اور اس سے امدادی ادارے کے تحت چلنے والے سکول کی گاڑی کو نشانہ بنایا گیا۔

حکام کے مطابق دھماکہ ریموٹ کنٹرول کی مدد سے کیا گیا اور ہلاک ہونے والی خواتین سکول کی اساتذہ تھیں۔ دھماکے کی اطلاع ملتے ہی سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا۔ تاحال یہ واضح نہیں کہ نشانہ بننے والی گاڑی ہی بم کا ہدف تھی یا نہیں۔

اس علاقے میں ماضی میں سکیورٹی فورسز اور امن لشکر کے ارکان کی گاڑیوں کو تو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے تاہم کسی سکول کی ویگن پر حملے کے واقعات عام نہیں۔

باجوڑ ایجنسی فاٹا میں انتہائی شمال میں واقع ہے اور رقبے کے اعتبار سے سب سے چھوٹی قبائلی ایجنسی ہے۔

اس کی سرحد افغانستان کے صوبے کنڑ سے بھی ملتی ہے اور یہاں سرحد پار سے آنے والے شدت پسندوں کے حملوں کے واقعات پیش آتے رہے ہیں۔

اسی بارے میں