بلوچستان میں ہلاکتوں کے خلاف احتجاج

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اتوار کو کیچ میں فرنٹیئر کور کی کارروائی میں دس افراد ہلاک ہوگئے تھے

بلوچستان کے علاقے کیچ اور تمپ میں مبینہ آپریشن اور ہلاکتوں کے خلاف بلوچ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن آزاد کی جانب سے کراچی میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

جس وقت یہ احتجاج جاری تھا اس وقت وفاقی دارالحکومت میں فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف اور وزیراعظم نواز شریف کے درمیان ملاقات کے بعد نیوز چینلز بریکنگ نیوز کے طور پر چل رہی تھی۔

بی ایس او آزاد کی چیئرپرسن کریمہ بلوچ کا کہنا تھا کہ جب بھی آزادئ صحافت اور سیاہ ادوار کا ذکر ہوگا تو یقیناً تاریخ 31 اگست کے دن کو بھول نہیں پائے گی جب اسلام آباد میں ربڑ کی چند گولیاں چلنے کی وجہ سے میڈیا اپنے اشتہارات تک قربان کرکے بلاتعطل براہ راست نشریات چلاتی رہی ’لیکن بلوچستان کے علاقوں تمپ، گومازی اور مند میں ہیلی کاپٹروں کی شیلنگ اور بلوچ سویلین آبادیوں پر بمباری اور عام شہریوں کی ہلاکتوں پر ایک جملہ بھی ادا نہیں کر سکی۔‘

اتوار کو کیچ میں فرنٹیئر کور کی کارروائی میں دس افراد ہلاک ہوگئے تھے، ایف سی کے اعلامیے کے مطابق خفیہ اداروں کی اطلاع پر شدت پسندوں کے خلاف گومازی کے علاقے میں سرچ آپریشن کیا گیا، جس میں 600 اہلکاروں نے حصہ لیا اور ہیلی کاپٹرز کی مدد لی گئی۔

کریمہ بلوچ نے احتجاج سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایف سی سویلین آبادی پر حملے کر کے انھیں شدت پسند قرار دیتی رہی ہے۔

’جو لوگ مسلح جدوجہد کر رہے ہیں وہ اپنے گھروں میں تو نہیں رہتے لیکن ایف سی ہمیشہ عام آبادی کو نشانہ بناتی ہے، جہاں زیادہ تر عورتیں اور بچے رہتے ہیں۔‘

کریمہ بلوچ کا کہنا تھا کہ’مذہبی شدت پسند گروہوں کو ریاستی اداروں کی پشت پناہی حاصل ہے یہ گروہ پہلے ہزارہ برادری اور بلوچ قوم پرست کارکنوں کو نشانہ بناتے آئے ہیں۔ وہ مہذب دنیا سے اپیل کرتے ہیں وہ بلوچستان میں مذہبی جنونیوں کی سرکاری سطح پر پرورش کا نوٹس لیں۔‘

اسلام آباد میں جاری دھرنوں کے دوران تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان اور پاکستان عوامی تریک کے سربراہ طاہر القادری نے بلوچستان کی محرومیوں کا بھی ذکر کیاہے۔

بی ایس او آزاد کی چیئرپرسن کریمہ بلوچ کا کہنا ہے کہ حکمران بدلنے سے بلوچستان میں کوئی مثبت تبدیلی ممکن نہیں، اقتدار کے حصول کے لیے یہ کہا جاتا رہا ہے کہ میں بلوچستان کی محرومیوں کو دور کر دوں گا، لیکن ہر کسی کو صرف اپنی کرسی اور اقتدار سے ہی غرض ہوتا ہے۔

اسی بارے میں