حیدرآباد: دو منزلہ مکان گرنے سے 11 ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption حیدرآباد میں کئی پرانی عمارات موجود ہیں

پاکستان کے صوبہ سندھ کے دوسرے بڑے شہر حیدر آباد میں دو منزلہ مکان گرنے سے کم سے کم 11 افراد ہلاک اور 18 سے زائد زخمی ہوگئے ہیں۔

یہ حادثہ منگل کی دوپہر وسطی شہر کے گنجان آبادی والے علاقے الیاس آْباد چوڑی پاڑہ میں پیش آیا جہاں ایک دو منزلہ مکان کی عمارت گر گئی اور نتیجے میں آس پاس کے مکانات پر بھی ملبہ گر گیا۔

جائے وقوعہ پر موجود متحدہ قومی موومنٹ کے رکن صوبائی اسمبلی راشد خلجی نے بی بی سی کو بتایا اب تک 11 افراد کی لاشیں نکالی جا چکی ہیں جن میں چار خواتین اور تین بچے بھی شامل ہیں۔

زخمیوں کو قریبی میمن اور سول ہپستال منتقل کیا گیا ہے۔

چوڑی پاڑہ شہر کی غریب آبادی ہے جہاں کانچ کی چوڑیاں بنانے کے چھوٹے کارخانے موجود ہیں۔ حادثے کا شکار ہونے والےگھر میں نیچے بھٹی بھی قائم تھی جبکہ بالائی منزل پر رہائشی مکان تھا۔

حادثے کے بعد لوگوں نے ملبہ ہٹا کر لاشوں اور زخمیوں کو نکالا۔

جائے وقوع پر موجود صحافیوں کے مطابق تنگ گلیوں کی وجہ سے کسی مشینری کا وہاں پہنچانا ممکن نہیں تھا۔

حادثے کا شکار اور آس پاس کے مکانات میں لوگوں کی موجودگی کے بارے میں متضاد اطلاعات سامنے آ رہی ہیں۔

حیدرآباد میں کئی پرانی عمارات موجود ہیں، جن میں سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی 70 عمارتوں کو زبون حالی کی وجہ سے خطرناک قرار دے چکی ہے۔

اسی بارے میں