ایدھی سنٹر پر ڈاکہ، پانچ کلو سونا، لاکھوں ڈالر چوری

Image caption عالمی شہرت یافتہ سماجی کارکن عبدالستار ایدھی ان کے دفتر میں ایک گھنٹہ تک یرغمال بنانے کے بعد لوٹا گیا

عالمی شہرت یافتہ سماجی کارکن عبدالستار ایدھی کو ان کے دفتر میں ایک گھنٹہ یرغمال بنانے کے بعد لوٹ لیا گیا ہے۔

کراچی کے میٹھا ڈار علاقے میں واقع ایدھی سینٹر میں آٹھ نامعلوم ڈاکوؤں نے داخل ہو کر عبدالستار ایدھی سمیت عملے کے افراد کو یرغمال بنانے کے بعد، بھاری رقم اور سونا لوٹ لیا۔

ایدھی فاؤنڈیشن کے ٹرسٹی اور عبدالستار ایدھی کے فرزند فیصل ایدھی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ڈاکو دفتر سے 5 کلو کے قریب سونا اور 3 سے 4 لاکھ کے قریب امریکی ڈالر چرا کر لے گئے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ لوٹے جانے والی اشیا کی تفصیل ابھی نہیں بتائی جا سکتی کیونکہ ڈاکو فہرستیں بھی ساتھ ہی لے گئے ہیں جن پر اشیا کی تفصیل تھی اور وہ مکمل تفصیلات ابھی جمع کر رہے ہیں۔

فیصل ایدھی نے بتایا کہ اتنی بڑی رقم دفتر میں اس لیے رکھی جاتی ہے کیونکہ یہ ہنگامی حالات یا کراچی شہر کے بند ہونے کی صورت میں کام آتی ہے اور چونکہ ہمارا دو دن کا خرچ 1 کروڑ کے قریب ہے اس لیے اس قدر رقم کی ہمیں فوری ضرورت اکثر پڑتی رہتی ہے۔

اس کے علاوہ غیر ملکی کرنسی ہنگامی حالات اور غیر ملکی آفات کی صورت میں حفظِ ماتقدم کے طور پر رکھی جاتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ سونا اکثر لاوارث لاشوں اور ایسے افراد کا ہوتا ہے جن کا ذہنی توازن درست نہیں یا جن کا کوئی وارث نہیں ہوتا۔ اس کے علاوہ سونا امانتاً بھی رکھا ہوا ہوتا جو لوگ ضرورت پڑنے پر لے لیتے ہیں۔

اسی بارے میں