راولپنڈی: گھریلو ناچاقی کے بعد عورت کی خود کشی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پولیس کے مطابق اہل محلہ کا کہنا ہے کہ دونوں میاں بیوی کے درمیان اکثر جھگڑا رہتا تھا

اسلام آباد کے جڑواں شہر راولپنڈی کے علاقے گلریز کالونی میں ایک خاتون نے گھریلو ناچاقی کی بنا پر دو کمسن بچوں اور اپنے شوہر کو زہر دے کر قتل کرنے کے بعد خود کشی کر لی۔

پولیس نے لاشوں کو قبصے میں لے کر انھیں پوسٹ مارٹم کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا۔

تھانہ ایئرپورٹ پولیس کے اہلکار رقیب احمد نے بی بی سی کو بتایا کہ مقتول شاہد عباس کے والد منظور حسین کے مطابق انھیں پیر کی علی الصبح ان کی بہو شاہدہ بی بی کا ٹیلی فون موصول ہوا جس میں انھوں نے بتایا کہ اس (شاہدہ بی بی) نے اپنے شوہر اور دو بچوں کو کھانے میں زہر ملا کر دے دیا ہے جس کے بعد اب وہ خود بھی زہر کھا کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر رہی ہے۔

مقامی پولیس کے مطابق اس ٹیلی فون کے بعد منظور حسین نے اہلِ محلہ سے رابطہ کیا جنھوں نے پولیس کی مدد سے مقتول کے گھر کا دروازہ توڑ کر اندر سے چار افراد کی لاشیں نکالیں۔

ان میں دس ماہ کی علیشا، پانچ سالہ عادل، شاہد عباس اور ان کی بیوی شاہدہ بی بی کی لاشیں شامل تھیں۔

پولیس کے مطابق مقتول شاہد عباس ایک نجی تعمیراتی کمپنی میں کام کرتے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ شاہد عباس نے کچھ عرصہ پہلے دوسری شادی کی تھی جبکہ شاہدہ بی بی کی بھی یہ دوسری شادی تھی۔

شاہدہ بی بی کا ایک پانچ سالہ بیٹا بھی تھا جبکہ دوسری شادی کے بعد شاہدہ بی بی کے بطن سے علیشا پیدا ہوئی تھی۔

پولیس کے مطابق اہل محلہ کا کہنا ہے کہ دونوں میاں بیوی کے درمیان اکثر جھگڑا رہتا تھا تاہم محلے کے لوگ ان کے درمیان صلح کروا دیتے تھے۔

ایس پی پوٹھوار محمد عتیق کے مطابق جائے وقوعہ سے برتن اور یگر سامان کو فورنسک لیب میں بھجوا دیا گیا ہے تاکہ یہ معلوم ہو سکے کہ مقتولین کو کتنی مقدار میں زہر دیا گیا۔

اس کے علاوہ پوسٹ مارٹم کے لیے لاشوں کو سول ہستپال منتقل کر دیا گیا ہے۔ پولیس نے مقدمہ درج کر لیا ہے۔

اسی بارے میں