مریم نواز وزیراعظم یوتھ پروگرام سے مستعفی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption مریم نواز وزیراعظم یوتھ پروگرام کی چیئرپرسن کے عہدے سے مستعفی

وزیراعظم یوتھ پروگرام کی چیئرپرسن مریم نواز شریف اپنے عہدے سےمستعفی ہو گئی ہیں۔

وزیراعظم یوتھ پروگرام کی جانب سے مریم نواز شریف کے استعفے کی کاپی میڈیا کو ارسال کی گئی، جس میں انھوں نے لکھا ہے: ’ مجھے خوشی ہے کہ وزیراعظم کا یوتھ پروگرام اب اچھی شکل میں ہے اور اگلے پانچ سال کے لیے اپنے راستے پر گامزن ہے۔‘

تاہم انھوں نے یہ تجویز دی کہ ’یہ مناسب وقت ہے کہ یوتھ پروگرام کی ذمے داری کسی دوسرے شخص کو سونپ دی جائے۔‘

مریم نواز نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ یوتھ پروگرام آنے والے دنوں، ہفتوں اور مہینوں میں کامیابی سے ہمکنار ہوگا۔

مریم نواز کا کہنا ہے کہ انھوں نے وزیراعظم کے یوتھ پروگرام میں رضاکارانہ اور اعزازی طور پر کام کیا ہے۔

’بلاشبہ میں پاکستان کی فخرمند بیٹی ہوں۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ وہ اپنے والد کے نقش قدم پر چلتے ہوئے پاکستان کو اپنی رضاکارانہ خدمات دیتی رہیں گی اور انھیں کسی سرکاری عہدے کے ساتھ یا اس کے بغیر عوام کی خدمت کرنے سے کوئی بھی نہیں روک سکتا۔

اپنے استعفے میں مریم نواز شریف نے خواتین کی حوصلہ افزائی کی، اپنے والد کی خدمات کو سراہا اور اپنے حامیوں کا شکریہ ادا کیا۔

یاد رہے کہ مریم نواز کی یوتھ پروگرام میں تعیناتی کو پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی جانب سے شدید تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔ ان کا موقف ہے کہ وزیراعظم نے یہ عہدہ اپنی بیٹی کو دے کر قانون اور قواعد کو نظر انداز کیا ہے۔

لاہور ہائی کورٹ میں مریم نواز شریف کو ملنے والے اس عہدے کے خلاف ایک درخواست بھی زیر سماعت ہے۔

اگرچہ عدالت نے اب تک اس درخواست پر کوئی حکم صادر نہیں کیا تاہم مقامی میڈیا رپورٹوں کے مطابق عدالت نے اپنے ریمارکس میں حکومت کو ایک موقع فراہم کیا تھا کہ مریم نواز کو رضاکارانہ طور پر اس عہدے سے ہٹا دیا جائے۔