جسٹس سردار رضا نے چیف الیکشن کمشنر کا حلف اٹھا لیا

تصویر کے کاپی رائٹ UNKNOWN
Image caption جسٹس سردار رضا خان اِس وقت فیڈرل شریعت کورٹ کے چیف جسٹس کی ذمہ داریاں نبھا رہے ہیں

سپریم کورٹ کے سابق جج سردار محمد رضا خان نے پاکستان کے چیف الیکشن کمشنر کے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔

سرکاری ٹی وی کے مطابق حلف برداری کی تقریب سنیچر کو اسلام آباد میں منعقد ہوئی اور پاکستان کے چیف جسٹس ناصر الملک نے سردار رضا سے حلف لیا۔

حلف برداری کی تقریب میں سپریم کورٹ کے ججوں سمیت اہم شخصیات شریک تھیں۔

مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق حلف برداری کے بعد چیف الیکشن کمشنر سردار رضا کا کہنا تھا کہ اگرچہ ابتدا میں وہ یہ عہدہ سنبھالنے سے گریزاں تھے تاہم اب وہ اس ادارے کی بہتری کے لیے ہرممکن کوشش کریں گے۔

اس موقع پر چیف جسٹس ناصر الملک نے ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال کے تناظر میں ایک ایسے چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کو خوش آئند قرار دیا جس پر ملک کی سیاسی جماعتوں کو اعتماد ہے۔

سردار رضا بطور چیف الیکشن کمشنر نامزدگی سے پہلے وفاقی شرعی عدالت کے چیف جسٹس تھے اور اب انھوں نے اپنے اس عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

جسٹس (ر) سردار رضا کا انتخاب چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے لیے بنائی گئی پارلیمانی کمیٹی نے حکومت اور قائدِ حزبِ اختلاف کی مشاورت کے بعد بھیجے جانے والے تین ناموں میں سے کیا تھا۔

کمیٹی کو سردار رضا کے علاوہ جسٹس (ر) طارق پرویز اور جسٹس (ر) تنویر احمد خان کے نام بھی بھیجے تھے۔

نئے چیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ سردار رضا خان کا تعلق صوبہ خیبر پختونخوا کے علاقے ایبٹ آباد سے ہے۔

وہ سنہ 1976 میں سول جج بنے اور پھر سینیئر سول جج کے عہدے پر فائز رہے جس کے بعد اُنھیں ایڈیشنل سیشن جج کے عہدے پر ترقی دی گئی۔

سردار رضا خان کو سنہ 1993 میں پشاور ہائی کورٹ کا ایڈیشنل جج تعینات کیا گیا جبکہ سنہ 2000 میں اُنھیں پشاور ہائی کورٹ کا چیف جسٹس بنا دیا گیا۔

جسٹس رضا پاکستان کے موجودہ چیف جسٹس ناصر الملک اور سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری سمیت اعلیٰ عدلیہ کے اُن ججوں میں شامل تھے جنھوں نے 26 جنوری سنہ 2000 میں سابق فوجی صدر پرویز مشرف کے پہلے عبوری آئینی حکم نامے کے تحت حلف لیا تھا۔

جسٹس سردار رضا خان کو سنہ 2002 میں سپریم کورٹ کا جج مقرر کیا گیا تھا اور وہ اس عہدے سے سنہ 2010 میں ریٹائر ہوئے تھے۔

اس عرصے کے دوران اُنھیں سپریم کورٹ کی طرف سے مختلف امور کی تحقیقات کے لیے بنائے گئے کمیشن کی سربراہی کی ذمہ داریاں بھی سونپی گئی تھیں۔

جسٹس ریٹائرڈ سردار رضا خان کو اس سال جون میں فیڈرل شریعت کورٹ کا چیف جسٹس مقرر کیا گیا تھا جبکہ اس سے پہلے وہ لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے بنائے گئے کمیشن کے سربراہ کی ذمہ داریاں بھی ادا کرتے رہے ہیں۔

اسی بارے میں