سیالکوٹ: ایم کیو ایم کے رہنما فائرنگ سے ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption تھانہ حاجی پورہ کے تفتیشی افسر محمد خان نے بی بی سی کو بتایا کہ نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہر سیالکوٹ میں متحدہ قومی موومنٹ کے ضلعی نائب صدر باؤ محمد انور کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا۔

یہ واقعہ منگل کی رات سیالکوٹ میں شہاب پورہ روڑ پر پیش آیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ باؤ محمد انور کو منگل کی رات اس وقت گولیاں ماری گئیں جب وہ اپنی دکان پر موجود تھے۔

پولیس کے مطابق مقتول کی دکان پر کام کرنے والے دو افراد زخمی بھی ہوئے۔

تھانہ حاجی پورہ کے تفتیشی افسر محمد خان نے بی بی سی کو بتایا کہ نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

دوسری جانب ایم کیو ایم کے سربراہ الطاف حسین نے کارکنوں سے ٹیلی فونک خطاب میں باؤ محمد انور کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا۔

ایم کیوایم کے قائد کا کہنا تھا کہ ہمارے کارکنوں کی تشدد زدہ لاشیں سڑکوں پر پھینک کر ہمیں صبرکی تلقین کی جاتی ہے۔

الطاف حسین نے خبردار کیا کہ اگر پنجاب میں ان کے کارکنوں کا قتل نہ روکا گیا تو پنجاب کا کوئی بھی وزیر سندھ میں داخل نہیں ہو سکے گا۔

ادھر وزیرِ اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ملزموں کی جلد گرفتاری کا حکم دیا ہے۔

اسی بارے میں