آپریشن ضرب عضب، مزید 12 ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption آپریشن ضرب عضب کے تحت تازہ کارروائی میں 12 شدت پسندوں کی ہلاکت کا دعویٰ کیا گیا ہے

پاکستانی فوج کے مطابق شمالی وزیرستان کی تحصیل دتہ خیل کے مرکزی قصبے دتہ خیل کے قریب فضائی کارروائی میں 12 شدت پسند ہلاک ہوگئے ہیں۔

بدھ کو فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب سے جاری کردہ تحریری بیان می دعویٰ کیا گیا ہے کہ گن شپ ہیلی کاپٹروں کے ذریعے شمالی وزیرستان کی تحصیل دتہ خیل کے قریبی علاقے کو نشانہ بنایا گیا۔

اس کارروائی میں 12 شدت پسند ہلاک ہوئے جبکہ ان کی سات گاڑیاں اور چار خفیہ ٹھکانے تباہ کیے گئے۔

یاد رہے کہ تین روز قبل امریکی ڈرون نے تحصیل دتہ خیل میں ہی الوڑہ منڈی کے قریب ایک مکان کو نشانہ بنایا تھا۔ جس کے بارے میں یہ اطلاعات موصول ہوئی تھی کہ اس حملے میں ایک اہم ازبک کمانڈر اپنے سات ساتھیوں سمیت ہلاک ہو گیا تھا۔ اس کا تعلق حافظ گل بہادر گروپ سے بتایا گیا تھا۔

پاکستان کا محکمہ خارجہ پاکستانی حدود میں کیے جانے والے ڈرون حملوں کی مذمت کرتا رہا ہے۔

ادھر شمالی وزیرستان کے علاوہ خیبر ایجنسی میں بھی آپریشن خیبر ون کے نام سے شدت پسندوں کے خلاف کارروائیوں کا سلسلہ جاری ہے۔

شمالی وزیرستان میں گذشتہ سال وسط جون سے فوجی آپریشن ضرب عضب شروع کیا گیا تھا اور اس آپریشن کے سلسلے میں پاکستان فوج کی کارروائیاں بھی جاری ہیں لیکن ساتھ ساتھ کبھی کبھار امریکی جاسوس طیارے بھی مشتبہ مقامات پر حملے کرتے رہتے ہیں۔

اسی بارے میں