کراچی میں القاعدہ کے مقامی رہنما ہلاک

کراچی تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کراچی میں پولیس نے مشتبہ طالبان کے خلاف کارروائیاں تیز کی ہوئی ہیں

کراچی پولیس نے جمعے کی صبح ایک کارروائی میں القاعدہ کے مقامی رہنما سجاد عرف کارگل کو ان کے تین ساتھیوں سمیت ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

سی آئی ڈی کےانسپکٹر راجہ عمر خطاب کے مطابق انھوں نے قیوم آباد میں تقریباً صبح پانچ بجے خفیہ اطلاع ملنے پر کارروائی کی۔

کارروائی کے دوران پولیس اور دہشت گردوں کے درمیان خاصی دیر فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کے دوران یہ چاروں دہشت گرد مارے گئے تاہم پولیس کا کوئی اہلکار زخمی نہیں ہوا۔

ان کے مطابق ان افراد پر ان کی کافی عرصے سے نظر تھی اور ان دہشت گردوں نے اسی علاقے میں صبح ایک سرکاری گاڑی پر حملہ کرنے کی تیاری کی ہوئی تھی۔

یہ وہی جگہ ہے جہاں رینجرز کے ایک بریگیڈیئر باسط پر فروری 2014 میں خود کُش حملہ ہوا تھا۔ بریگیڈیئر باسط اس حملے میں زخمی ہوئے تھے۔

راجا عمر خطاب نے بتایا کہ ملزمان کے قبضے سے خود کُش جیکٹ، کلاشنکوف اور جدید اسلحہ برآمد ہوا ہے۔

پولیس کے مطابق ان چاروں افراد پر سات پولیس اہلکاروں کے قتل کا بھی الزام تھا جبکہ شہر میں چار بم دھماکوں میں بھی ان کا ہاتھ بتایا جاتا ہے۔ سجاد نہ صرف ان کا کمانڈر تھا بلکہ ان کا ماسٹر مائنڈ بھی تھا۔

اسی بارے میں