لوئر اورکزئی میں کوئلے کی کان میں دھماکہ، چھ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان میں کان کنی کے شعبے میں حفاظتی انتظامات کے ناقص ہونے کی شکایات سامنے آتی رہی ہیں

پاکستان کے قبائلی علاقے اورکزئی ایجنسی میں کوئلے کی ایک کان میں دھماکے سے چھ مزدور ہلاک ہوگئے ہیں۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق یہ حادثہ لوئر اورکزئی میں ڈولی کے مقام پر جمعرات کی صبح پیش آیا ہے۔

انتظامیہ کے اہلکار نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ علاقے میں واقع شیرازی کول مائن کمپنی کی ملکیتی کان اس وقت بیٹھ گئی جب اس میں گیس بھر جانے سے دھماکہ ہوا۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ اس حادثے میں موقع پر موجود چھ مزدور ہلاک اور تین زخمی ہوگئے۔

انھوں نے بتایا کہ حادثے کی اطلاع ملتے ہی امدادی کارروائیاں شروع کر دی گئیں اور لاشوں اور زخمیوں کو متاثرہ کان سے نکال لیا گیا ہے۔

Image caption جس جگہ یہ حادثہ پیش آیا ہے وہاں 300 کے قریب کوئلے کی کانیں ہیں

اہلکار نے یہ بھی بتایا کہ زخمیوں کو قریبی ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ سوات کے علاقے شانگلہ سے تعلق رکھنے والے تمام ہلاک شدگان کی لاشیں ان کے آبائی علاقے روانہ کی جا رہی ہیں۔

جس جگہ یہ حادثہ پیش آیا ہے وہاں 300 کے قریب کوئلے کی کانیں ہیں اور یہاں پہلے بھی ایسے حادثات رونما ہوتے رہے ہیں۔

گذشتہ ہفتے بھی اسی علاقے میں ایک کان میں دھماکے میں تین مزدور مارے گئے تھے لیکن اس کے باوجود انتظامیہ کی جانب سے کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

پاکستان میں کان کنی کے شعبے میں حفاظتی انتظامات کے ناقص ہونے کی شکایات سامنے آتی رہی ہیں اور ملک میں پہلے بھی کانوں میں حادثے پیش آتے رہے ہیں۔

سنہ 2011 میں بلوچستان کے علاقے سپن کاریز میں میتھین گیس بھر جانے کے باعث کوئلے کی ایک کان میں دھماکہ ہواتھا جس کے نتیجے میں 43 کان کن ہلاک ہوئے تھے۔

اسی بارے میں