بلوچستان: پولیس افسر حملے میں شدید زخمی، دو اہلکار ہلاک

Image caption ڈی پی او کو تین گولیاں لگی ہیں جس کے باعث ان کی حالت تشویشناک ہے: لیویز اہلکار

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع لورالائی میں ضلعی پولیس افسر کے قافلے پر حملے میں میں کم از کم دو پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

حملے میں لورالائی کے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر شیرانی سمیت دو اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں۔

لورالائی میں لیویز فورس کے ایک اہلکار نے بتایاکہ ضلعی پولیس افسر شیرانی اپنی گاڑی میں شیرانی سے لورالائی کی جانب آ رہے تھے۔

جب ان کی گاڑی ضلع لورالائی کے علاقے اسپیرہ راغہ کے علاقے میں پہنچی تو نامعلوم مسلح افراد نے اس پر اندھا دھند فائرنگ کی۔

فائرنگ کے نتیجے میں دو پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے۔ دونوں ہلاک شدگان ڈی پی او کے محافظ تھے۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ اس حملے میں ڈی پی او شیرانی کے علاوہ ایک پولیس اہلکار زخمی بھی ہوا ہے۔

لیویز فورس کے اہلکار نے بتایا کہ ڈی پی او کو تین گولیاں لگی ہیں جس کے باعث ان کی حالت تشویشناک ہے۔ ڈی پی او اور زخمی اہلکار کو ابتدائی طبی امداد کے لیے لورالائی شہر منتقل کیاگیا۔

تحریک طالبان پاکستان ایک پیغام میں ڈی پی او کے قافلے پر حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

لورالائی کوئٹہ شہر سے شمال مشرق میں اندازاً ایک سو ساٹھ کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔ لورالائی کی آبادی مختلف پشتون قبائل پر مشتمل ہے۔

ایک اور واقعے میں ضلع ڈیرہ بگٹی میں بارودی سرنگ کے دھماکے میں ایک شخص زخمی ہوا۔ ضلعی انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بتایا کہ نامعلوم افراد نے پولیس کی حدود میں بارودی سرنگ نصب کیا تھا۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ بارودی سرنگ کے پھٹنے سے ایک شخص زخمی ہوا جسے علاج کے لیے مقامی ہسپتال منتقل کر دیا گیا

اسی بارے میں