جنوبی وزیرستان میں دھماکے میں 12 افراد زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جنوبی وزیرستان سے متصل شمالی وزیرستان میں جون 2014 میں آپریشن ضربِ عضب کا آغاز ہوا تھا جبکہ اب متاثرین کی واپسی کا عمل شروع ہو گیا ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے جنوبی وزیرستان کے ایک گھر کے اندر دھماکے کے نتیجے میں 12 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

پاکستان کے سرکاری ٹی وی نے پولیٹیکل انتظامیہ کے حوالے سے خبر دی ہے کہ بدھ کو جنوبی وزیرستان علاقے بگن میں ایک گھر میں زوردار دھماکہ ہوا۔

دھماکے کے نتیجے میں 12 افراد کے زخمی ہونے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔

انتظامیہ کے مطابق زخمیوں کو طبی امداد کے لیے صدہ کے ایک ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ جنوبی وزیرستان میں 2009 میں فوجی آپریشن ’راہ نجات‘ شروع کیا گیا تھا جس میں سات لاکھ افراد نقلِ مکانی کر کے ٹانک، ڈیرہ اسماعیل خان اور دیگر علاقوں کو چلے گئے تھے۔ ان متاثرین کی واپسی کا عمل 16مارچ کو شروع ہوا جبکہ جنوبی وزیرستان سے متصل شمالی وزیرستان میں گذشتہ سال جون میں آپریشن ضرب عضب کے نتیجے میں بےگھر ہونے والے تقریباً دس لاکھ سے زائد متاثرین کی واپسی کے عمل کا آغاز گذشتہ روز ہوا ہے۔

فوج کے ترجمان کے مطابق آپریشن ضرب عضب میں شمالی وزیرستان کا اسّی فیصد علاقہ شدت پسندوں سے پاک کیا جا چکا ہے۔

اسی بارے میں