چینی صدر کے دورۂ پاکستان کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اکتوبر 2014 میں پاکستان میں سیاسی کشیدگی کی وجہ سے چین کے صدر کا دورہ ملتوی ہوا تھا۔

پاکستانی دفترِ خارجہ نے کہا ہے کہ چین کے صدر شی جن پنگ پیر 20 اپریل کو دو روزہ سرکاری دورے پر پاکستان آئیں گے۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال اکتوبر میں چین کے صدر نے پاکستان کا دورہ کرنا تھا تاہم پاکستان کی سیاسی صورت حال میں کشیدگی کی وجہ سے انھیں اپنا دورہ ملتوی کرنا پڑا تھا اور انھوں نے پاکستان کے بجائے بھارت کا طویل دورہ کیا تھا۔

جمعرات کو ہفتہ وار بریفنگ کے دوران دفترِ خارجہ کی ترجمان تسنیم اسلم نے بتایا کہ چین کے صدر کی پاکستان آمد کے موقعے پر دونوں ممالک کے درمیان اہم معاہدوں پر دستخط ہوں گے۔

پاک چین راہداری کے منصوبے پر تنازع

واضح رہے کہ گذشتہ نو برسوں میں کسی بھی چینی صدر کا پاکستان کا یہ پہلا دورہ ہو گا۔ رواں سال فروری کے آغاز میں چین کے وزیرِ خارجہ نے پاکستان کا دورہ کیا تھا۔

حکومت نے چین کے صدر کے دورے کی معطل کرنے کی ذمہ داری عمران خان اور طاہرالقادری پر عائد کی تھی اور اسے پاکستان کے لیے سب سے بڑا سفارتی نقصان اور باعثِ شرم قرار دیا تھا۔

ستمبر 2014 میں وزیراعظم پاکستان نواز شریف کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ چین نے پاکستان میں بجلی کے بحران پر قابو پانے کے لیے آئندہ چار برس کے دوران ملک میں دس ہزار میگاواٹ سے زیادہ کے بجلی گھروں کی تعمیر کے لیے ترجیحی بنیادوں پر مدد فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

حال ہی میں پاکستان کے وفاقی وزیر برائے پیٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ چین پاکستانی علاقے میں ’پاک ایران گیس پائپ لائن‘ تعمیر کرےگا۔

اسی بارے میں