ذوالفقار مرزا کے ’ہتک آمیز‘ بیانات کے خلاف پیمرا میں شکایت

تصویر کے کاپی رائٹ bbc
Image caption پیمرا کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اس مراسلے کے ساتھ ٹی وی چینلوں کی نشریات کی ریکارڈنگ بھی جمع کرائی گئی ہے

پاکستان پیپلز پارٹی نے منحرف رہنما اور سابق صوبائی وزیر ذوالفقار مرزا کی جانب سے سابق صدر آصف زرداری کے خلاف ہتک آمیز بیانات ٹی وی چینلوں پر براہ راست نشر کرنے کے خلاف درخواست پیمرا میں جمع کروائی ہے۔

پاکستان میں الیکٹرانک میڈیا کے نگراں ادارے پیمرا نے پیپلز پارٹی کی جانب سے درخواست کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ شکایات کا جائزہ لے رہا ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کا کہنا ہے درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ آئین اور پیمرا کے قواعد و ضوابط کے خلاف ٹی وی چینلوں پر نشر ہونے والے ’منظم اور یک طرفہ ہتک آمیز پروگراموں‘ کی تشہیر روکی جائے۔

پارٹی کے ایک اعلامیے کے مطابق صوبہ سندھ میں پارٹی کے سیکریٹری جنرل تاج حیدر نے اس سلسلے میں پیمرا کے چیئرمین کو خط لکھا ہے، جس میں ٹی وی چینلوں پر ’ذوالفقار مرزا کی جانب سے پارٹی قیادت کے خلاف شروع کی جانے والی معاندانہ مہم‘ پر توجہ دلائی گئی ہے۔

اعلامیے کے مطابق تاج حیدر اور سنیٹر کریم خواجہ نے یہ تحریری شکایت پیر کو پیمرا کے چیئرمین کو دی ہے۔

پیمرا کے ایک ترجمان نے بی بی سی اردو سروس کو بتایا کہ ’اس مراسلے کے ساتھ ٹی وی چینلوں کی نشریات کی ریکارڈنگ بھی جمع کرائی گئی ہے جس کا پیمرا کے قوانین اور ضابطہ اخلاق کے تحت جائزہ لیا جارہا ہے اور اسے قاعدے کے تحت سماعت کے لیے شکایتی کونسل میں بھیجا جائے گا۔‘

خط میں کہا گیا ہے کہ ’سابق صدر کے خلاف جس طرح کی گھٹیا اور بے ہُودہ زبان پر مبنی یک طرفہ اور معاندانہ بیانات ٹی وی چینلوں پر مسلسل اور کسی ثبوت کے بغیر نشر کیے جارہے ہیں، وہ پیمرا کے قواعد کی سنگین خلاف ورزی ہے اور اس کا لازماً جائزہ لیا جانا چاہیے۔‘

خط میں کسی مخصوص ٹی وی چینل کا نام نہیں دیا گیا۔ تاج حیدر نے کہا کہ ٹی وی چینلوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ان کا پلیٹ فارم کسی کے بھی خلاف ہتک عزت اور بے بنیاد اور جھوٹے الزامات پر مبنی مواد کی تشہیر کے لیے استعمال نہ ہو۔

انھوں نے پیمرا پر زور دیا ہے کہ وہ فوری مداخلت کرے اور سات دن کے اندر ضروری کارروائی کرے، بصورت دیگر پارٹی قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتی ہے۔

ذوالفقار مرزا پچھلے کئی ماہ سے پارٹی قیادت خاص طور پر سابق صدر آصف علی زرداری سے ناراض ہیں اور حالیہ دنوں میں پاکستان کے نجی ٹی وی چینلوں پر ان کے ایسے انٹرویو بھی نشر کیے گئے ہیں جن میں انھوں نے آصف زرداری کے کردار پر سنگین نوعیت کے الزامات عائد کیے ہیں۔

اسی بارے میں