باجوڑ دھماکے میں قبائلی رہنما سمیت چھ افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption خیبر ایجنسی میں سکولوں، سکیورٹی فورسز اور امن لشکروں کو متعدد بار نشانہ بنایا جا چکا ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے باجوڑ ایجنسی کی تحصیل ماموند میں ریمورٹ کنٹرول بم دھماکے کے نتیجے میں قبائلی رہنما سمیت چھ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

باجوڑ ایجنسی میں پولیٹکل ایجنٹ کے دفتر میں ڈیوٹی پر موجود اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ پیر کی صبح ساڑھے سات بجے پیش آنے والے اس واقعے میں قبائلی سردار کی گاڑی کو تحصیل ماموند میں نشانہ بنایا گیا۔

انھوں نے بتایا کہ ریمورٹ کنٹرول بم کو سڑک کے کنارے نصب کیا گیا تھا اور حادثے میں گاڑی میں سوار قبائلی رہنما ملک محمد جان سمیت چھ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

سرکاری ٹی وی کے مطابق علاقے میں سکیورٹی فورسز کا سرچ آپریشن جاری ہے۔

خیال رہے کہ باجور ایجنسی کا شمار فاٹا کے ان علاقوں میں ہوتا ہے جہاں سکولوں، سکیورٹی فورسز اور پولیو سے بچاؤ مہم کی ٹیموں پر متعدد حملے کیے جا چکے ہیں۔

ایجنسی کے مختلف مقامات پر سکیورٹی فورسز اور طالبان مخالف لشکر کے رضاکاروں اور امن جرگوں کے ممبران کو بھی نشانہ بنایا جاتا رہا ہے ۔

اسی بارے میں