پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی رائے حسن نواز نااہل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption عمران خان نے گزشتہ انتخابات میں وسیع پیمانے پر دھاندلی کا الزام عائد کر رکھا ہے

جنوبی پنجاب کے شہر ملتان کے الیکشن ٹربیونل نے تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی رائے حسن نواز خان کو اثاثہ جات چھپانے پر نااہل قرار دے دیا ہے۔

ٹربیونل کے سربراہ رانا زاہد نے ناااہلی کا حکم منگل کو رائے حسن نواز خان کے خلاف انتخابی عذرداری پر فیصلہ سناتے ہوئے دیا۔

ٹربیونل کے فیصلے کے وقت حسن نواز خان موجود نہیں تھے کیونکہ وہ عمرہ کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب میں ہیں اور اتوار تک ان کی ملک واپسی کا امکان ہے۔

عام انتخابات میں رائے حسن نواز ساہیوال سے قومی اسمبلی کے حلقہ 162 سے تحریک انصاف کے ٹکٹ پر کامیاب ہوئے تھے۔

رائے حسن نواز کے خلاف آزاد امیدوار حاجی ایوب ناصر نے انتخابی عذرداری دائر کی تھی جس میں رائے حسن کو نااہل قرار دینے کی استدعا کی گئی تھی۔

نامہ نگار عدیل اکرم کے مطابق ناصر ایوب نے عذرداری میں یہ الزام لگایا کہ رائے حسن نواز نے کاغذات نامزدگی میں اپنے اثاثوں کو ظاہر نہیں کیا اور انہیں پوشیدہ رکھا ہے جس کی بنا پر وہ رکن اسمبلی بننے اور اس عہدے پر فائز رہنے کے اہل نہیں ہیں۔

الیکشن ٹربیونل نے ناصرایوب کی رائے حسن نواز خان کے خلاف انتخابی عذرداری منظور کرتے ہوئے انہیں نااہل قرار دیا ہے۔

حاجی ناصر ایوب کوآزاد امیدوار ہونے کے باوجود مسلم لیگ نون کی حمایت حاصل تھی کیونکہ اسی حلقے سے مسلم لیگ نون کے امیدوار زاہد اقبال کاغذات نامزدگی مسترد ہونے پر انتخابات میں حصہ نہیں لے سکے تھے۔

قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ رائے حسن نواز اپنے خلاف فیصلہ کو چیلنج کر سکتے ہیں اور اس مقصد کے لیے انہیں فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کرنا ہوگی۔

گزشتہ دونوں الیکشن ٹربیونل نے وفاقی وزیر خواجہ سعد رفیق اور مسلم لیگ نون کے لاہور سے رکن پنجاب اسمبلی میاں نصیر کے انتخابی حلقوں کے نتائج کو کالعدم قرار دے کر ان میں نئے انتخابات کرانے کا حکم دیا۔

تاہم سپریم کورٹ نے ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف اپیل پر عمل درآمد روکتے ہوئے عارضی طور پر خواجہ سعد رفیق اور میاں نصیر کو ان کی نشستوں پر بحال کردیا ہے۔

دو ہزار تیرہ کے انتخابات میں کامیاب ہونے والے امیدواروں کے خلاف ان کے مدمقابل مختلف سیاسی جماعتوں کے امیدوار نے انتخابی عذرداری دائر کر رکھیں ہیں اور ان پر الیکشن ٹربیونل سماعت کر رہے ہیں۔

تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کے خلاف انتخابی عذرداری دائر کررکھی ہے اور الیکشن ٹربیونل لاہور اس پر کارروائی کررہا ہے۔

الیکشن کمیشن نے صوبہ پنجاب میں قائم الیکشن ٹربیونلز کی معیاد میں دو ماہ کی توسیع کی تاکہ وہ زیر سماعت انتخابی عذرداریوں پر تیس جون تک فیصلہ سنا سکیں۔

اسی بارے میں