کراچی میں فائرنگ، ہوٹل کا مالک بیٹوں سمیت ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پولیس نے اس واقعے کو فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ قرار دیا ہے

پاکستان کے صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں فائرنگ کے ایک واقعے میں ایک ہوٹل کے مالک کو اس کے دو بیٹوں سمیت ہلاک کر دیا گیا ہے۔

یہ واقعہ جمعرات کی شب الفلاح تھانے کی حدود میں ملیر بلاک سی میں پیش آیا ہے۔

الفلاح پولیس کے مطابق موٹرسائیکل پر سوار مسلح افراد نے مدینہ مارکیٹ میں واقع خیبر ہوٹل پر فائرنگ کی جس میں تین افراد زخمی ہوگئے۔

پولیس کے مطابق زخمیوں کو جناح ہپستال پہنچایا گیا، جہاں شعبۂ حادثات کی انچارج ڈاکٹر سیمی جمالی نے ان کی ہلاکت کی تصدیق کر دی۔

مقتولین کی شناخت حاجی عبدالوہاب اور فرحان اور عصمت کے نام سے کی گئی ہے جن میں سے فرحان اور عصمت عبدالوہاب کے بیٹے تھے۔

کالعدم مذہبی تنظیم اہل سنت و الجماعت کے ترجمان کا کہنا ہے کہ مقتول عبدالوہاب ملیر میں ان کے رہنما تھے اور مخالفین نے انھیں ہدف بنا کر ہلاک کیا ہے۔

پولیس نے بھی اس واقعے کو فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ کراچی میں رینجرز کے آپریشن کے باوجود فرقہ وارانہ بنیادوں پر حملوں اور ہلاکتوں کا سلسلہ رک نہیں سکا ہے۔

گزشتہ جمعرات کو ہی صفورا چورنگی کے قریب اسماعیلی برداری کی بس پر ایسے ہی ایک حملے میں 47 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

اسی بارے میں