کوئٹہ میں فائرنگ سے پانچ شیعہ ہزارہ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption صوبہ بلوچستان میں شیعہ ہزارہ آبادی مسلسل عدم تحفظ کا شکار ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے شیعہ ہزارہ برادری سے تعلق رکھنے والے پانچ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

فائرنگ کا یہ واقعہ اتوار کو کوئٹہ میں سرکلرر روڈ پر میزان چوک کے قریب پیش آیا۔

کوئٹہ پولیس کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ میزان چوک پر واقع ایک دکان پر ہزارہ قبیلے سے تعلق رکھنے والے افراد جمع تھے کہ دو موٹر سائیکلوں پر سوار چار نامعلوم مسلح افراد وہاں آئے اور فائرنگ شروع کر دی۔

اہلکار کے مطابق اس فائرنگ کے نتیجے میں تین افراد موقع پر ہلاک اور دو شدید زخمی ہوگئے۔

زخمی ہونے والے دونوں افراد کو سی ایم ایچ کوئٹہ منتقل کر دیا گیا تاہم وہ بھی زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption زخمی ہونے والے دونوں افراد کو سی ایم ایچ کوئٹہ منتقل کر دیا گیا تاہم وہ بھی زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسے

اس واقعے کے بعد شہر میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا اور مرکزی علاقوں میں دکانیں بند ہوگئیں جبکہ علاقے میں پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کی بڑی تعداد پہنچ گئی۔

تاحال کسی تنظیم یا گروپ نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

کوئٹہ میں ایک وقفے کے بعد شیعہ مسلک سے تعلق رکھنے والے ہزارہ قبیلے کے ارکان کو نشانہ بنائے جانے کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

گذشتہ ماہ بھی اسی طرح کے ایک واقعے میں ہزارہ قیبلے سے تعلق رکھنے والے دو افراد ہلاک ہوئے تھے۔

اسی بارے میں