’کشمیر کے مسئلے کو تاریخ کے سرد خانے میں نہیں رکھا جاسکتا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’ہم پرامن ہمسائیگی کی اپنی جستجو نہیں چھوڑیں گے۔ تاہم مذاکراتی عمل کے فروغ کے لیے پاکستان کی کوششوں کا مثبت جواب دیا جائے‘

وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف نے سفارتکاروں کی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر کے مسئلے کو تاریخ کے سرد خانے میں نہیں رکھا جاسکتا۔

سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق جمعرات کو وزیر اعظم نے کہا ہے کہ پاکستان ہرقیمت پر اپنے اہم مفادات کا تحفظ کرے گا اور اس کو واضح دو ٹوک پیغام سمجھا جانا چاہیے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستانی قوم کو بھارت کی سیاسی قیادت کی طرف سے حالیہ غیر ذمہ دارانہ اور غیر دانشمندانہ بیانات پر مایوسی ہوئی ہے۔

’اس طرح کی بیان بازی سے ماحول کشیدہ ہوگیا ہے۔ ہمیں علاقائی امن وسلامتی کے ہدف سے مزید دور لے گیا ہے۔‘

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان اشتعال انگیزی کی وجہ سے اپنی بلند اخلاقی روایات ترک نہیں کرے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم پرامن ہمسائیگی کی اپنی جستجو نہیں چھوڑیں گے۔ تاہم مذاکراتی عمل کے فروغ کے لیے پاکستان کی کوششوں کا مثبت جواب دیا جائے۔‘

نوازشریف نے کہا کہ جموں وکشمیر کے مسئلے کو تاریخ کے سرد خانے میں نہیں رکھاجاسکتا۔ انھوں نے کہا کہ انھوں نے دوشنبے میں اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل سے ملاقات کے دوران ان پر زور دیا کہ وہ خطے میں امن کے فروغ کے لیے موثر کردار ادا کریں۔

’میں نے انھیں یاد دلایا کہ یہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی ذمہ داری ہے کہ وہ جموں وکشمیر کے بارے میں اپنی قراردادوں پر جلد عمل درآمد کو یقینی بنائے۔‘

افغانستان کے بارے میں وزیر اعظم نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان قریبی تعلقات قائم ہیں اور دہشتگردی کا مل کر مقابلہ کرنے کا عزم ہے۔

نوازشریف نے کہا کہ آپریشن ضرب عضب سے دہشتگردوں کا نیٹ ورک ختم ہوگیا ہے۔ ان کی نگرانی کا نظام درہم برہم اور ان کی حمایت کرنے والے کمزور ہوگئے ہیں۔

’ہم کامیاب ہورہے ہیں لیکن ابھی لمبا راستہ باقی ہے کیونکہ ہم نسلی اور فرقہ وارانہ سمیت ہر قسم کے تشدد کے خلاف کارروائیاں کررہے ہیں۔‘

اُنھوں نے کہا کہ قومی لائحہ عمل جس پر ملک میں اتفاق رائے پایا جاتا ہے ہمیں دہشتگردی کے خلاف موثر اور فیصلہ کن انداز سے نمٹنے کیلئے ضروری رہنمائی فراہم کرنا ہے۔

اُنھوں نے کہا کہ چین پاک اقتصادی راہدی منصوبے سے پاکستان اور خطے کی قسمت بدل جائے گی۔

اسی بارے میں