ماڈل ایان علی کی ضمانت منظور

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پانچ لاکھ امریکی ڈالر کسی اور کی نہیں بلکہ ایان علی کی ملکیت تھے وہ اپنے بھائی کو دینے کے لیے ایئرپورٹ پہنچی تھیں: وکیل

جسٹس انوار الحق کی سربراہی میں لاہور ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے پانچ لاکھ امریکی ڈالر بیرون ملک سمگل کرنے کے الزام میں گرفتار ہونے والی ماڈل ایان علی کی ضمانت کی درخواست کو منظور کرتے ہوئے اُنھیں رہا کرنے کا حکم دیا ہے۔

ملزمہ کے وکیل سردار لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ اُنھیں ابھی تک اپنی موکلہ کی رہائی کے بارے میں عدالت کے تحریری احکامات نہیں ملے اور عدالتی حکم ملنے کے بعد ہی معلوم ہو سکے گا کہ رہائی کے لیے کتنی مالیت کے ضمانتی مچلکے جمع کروائے جائیں گے۔

ضمانت کی درخواست کے حق میں دلائل دیتے ہوئے ایان علی کے وکیل سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ اُن کی موکلہ نے دبئی جانے کے لیے بورڈنگ کارڈ تک حاصل نہیں کیا تھا تو پھر کسٹم کے حکام کیسے کہہ سکتے ہیں کہ ملزمہ پانچ لاکھ امریکی ڈالر بیرون ملک سمگل کر رہی تھی۔

اُنھوں نے کہا کہ پانچ لاکھ امریکی ڈالر کسی اور کی نہیں بلکہ ایان علی کی ملکیت تھے اور اُنھوں نے یہ رقم اپنے بھائی کو دینی تھی جو یہ رقم لینے کے لیے اسلام آباد ایئرپورٹ آئے تھے۔

سردار لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ اُن کے موکلہ نے یہ رقم پلاٹ بیچ کر حاصل کی تھی۔ اُنھوں نے کہا کہ منی لانڈرنگ اور رقم بیرون ملک لے کر جانے سے متعلق قوانین مختلف ہیں جبکہ کسٹم کے حکام اُن کی موکلہ پر منی لانڈرنگ کا جرم ثابت کرنے کی کوشش کر رہے ہیں جو کسی طور پر بھی مناسب نہیں ہے۔

اُنھوں نے کہا کہ کسٹم کے حکام اس ضمن میں اپنی تفتیش مکمل کر چکے ہیں۔ اُنھوں نے کہا کہ اُن کی موکلہ ایک قابل عزت خاتون ہے اور ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ایک سازش کے تحت اُن کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

سردار لطیف کھوسہ نے عدالت سے استدعا کی کہ آیان علی کی ضمانت کی درخواست منظور کی جائے۔

کسٹم حکام نے عدالت میں ملزمہ ایان علی کو جاری کیا گیا بورڈنگ کارڈ بھی پیش کیا اور کہا کہ پانچ لاکھ امریکی ڈالر ملزمہ سے ہی برآمد ہوئے ہیں۔

اُنھوں نے کہا کہ کسٹم کی عدالت میں ملزمہ پر 27 جولائی کو فرد جرم بھی عائد کی جائے گی۔ کسٹم حکام کا کہنا تھا کہ اس مقدمے کی تفتیش کے دوران دیگر افراد کے بیانات بھی قلمبند کیے جا رہے ہیں اس لیے ملزمہ کی ضمانت کی درخواست منظور نہ کی جائے۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد درخواست گزار کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے ملزمہ ایان علی کی ضمانت کی درخواست منظور کر لی۔ اس پہلے کسٹم کی عدالت ایان علی کی ضمانت کی درخواست مسترد کر چکی ہے۔

اآیان علی اس وقت راولپنڈی کی اڈیالہ جیل میں ہیں۔

واضح رہے کہ ایان علی کو 14 مارچ کو اُس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب وہ مبینہ طور پر پانچ لاکھ امریکی ڈالر لےکر دبئی جا رہی تھیں۔ پاکستانی قوانین کے مطابق کوئی بھی شخص صرف دس ہزار امریکی ڈالر تک مالیت کی کرنسی ہی اپنے ساتھ بیرون ملک لے کر جا سکتا ہے۔

اسی بارے میں