ڈرگ مافیا اور دہشت گردوں کے گٹھ جوڑ کو ختم کیا جائے گا: آرمی چیف

تصویر کے کاپی رائٹ ISPR
Image caption آرمی چیف کو ڈی جی اے این ایف میجر جنرل خاور حنیف نے نشہ آور ادویات کی سمگلنگ کے تدارک کے لیے کی جانے والی کارروائیوں سے آگاہ کیا

پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے کہا ہے کہ منشیات کا کاروبار کرنے والوں، انھیں مالی معاونت فراہم کرنے والوں اور دہشت گردوں کے درمیان موجود گٹھ جوڑ کو ختم کیا جائے گا۔

راولپنڈی میں اینٹی نارکوٹکس فورس کے ہیڈ کوارٹر میں آرمی چیف کو ڈی جی اے این ایف میجر جنرل خاور حنیف نے بریفنگ دی اور نشہ آور ادویات کی سمگلنگ کے تدارک کے لیے کی جانے والی کارروائیوں سے آگاہ کیا۔

ڈی جی اے این ایف نے آرمی چیف کوبین الاقوامی اور علاقائی صورت حال اور اس کے پاکستانی معاشرے پر پڑنے والے اثرات سے بھی آگاہ کیا۔

انھوں نے ’ڈرگ فری سوسائٹی‘ کے قیام کو یقینی بنانے کے لیے بنائے گئے پانچ سالہ منصوبے اور درپیش چیلنجوں کے بارے میں بھی بتایا۔

اس موقعے پر جنرل راحیل شریف نے کہا کہ منشیات فروخت کرنے والے اور اس کی تیاری میں ملوث لوگ ملکی سکیورٹی کے لیے اتنے ہی نقصان دہ ہیں جتنے کہ دہشت گرد ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ڈرگ کے کاروبار سے حاصل ہونے والا پیسہ دہشت گردی کی ترویج میں استعمال ہو رہا ہے۔ اس لیے نشے کے کاروبار میں ملوث لوگوں سے آہنی ہاتھوں نے نمٹنا ہو گا۔

آرمی چیف نے مزید کہا کہ منشیات کے کاروبار کرنے والوں کو اس بات کی اجازت نہیں دی جائے گی کہ وہ ہماری آنے والے نسلوں پر اس کے منفی اثرات مرتب کریں اور انھیں تباہ کریں۔

Image caption وزیراعظم اور آرمی چیف نے ملکی سلامتی سمیت افغان مفاہمتی عمل پر بھی بات کی

دوسری جانب پاکستان کے وزیراعظم میاں محمد نواز شریف اور آرمی چیف نے درمیان اسلام آباد میں ملاقات ہوئی۔

سرکاری ریڈیو کے مطابق ملاقات میں ملکی سیکورٹی اور شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن ضرب عضب کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا۔

اس کے علاوہ ملاقات میں علاقائی صورت حال کے تناظر میں افغان مفاہمتی عمل کا جائزہ بھی لیا گیا۔

اسی بارے میں