ہری پور میں ضمنی انتخاب، پہلی بار بائیو میٹرک کے ذریعے ووٹنگ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حلقے کے بائیو میٹرک سسٹم کے تحت 30 پولنگ سٹیشنز میں 36 ہزار ووٹرز ووٹ ڈالیں جانے تھے

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے-19 (ہری پور) میں ضمنی انتخاب کے موقعے پر ملکی تاریخ میں پہلی بار پولنگ کے لیے بائیو میٹرک سسٹم استعمال کیا گیا۔

اتوار کو پولنگ صبح آٹھ بجے سے بغیر کسی وقفے کے شام 5 بجے تک جاری رہی۔

حلقے میں کُل 9 امیدوار مد مقابل ہیں جبکہ مسلم لیگ نواز کے بابر نواز اور پاکستان تحریک انصاف کے ڈاکٹر راجہ عامر زمان میں سخت مقابلے کی توقع ہے۔

الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ ضمنی انتخاب میں بائیو میٹرک سسٹم کی کامیابی کے بعد عام انتخابات میں بھی اس سے فائدہ اٹھایا جائے گا۔

الیکشن کمیشن کے مطابق اس حلقے کے 513 پولنگ سٹیشنز میں سے 30 پولنگ سٹیشنز پر بائیو میٹرک سسٹم نصب کیا گیا۔

حلقے کے بائیو میٹرک سسٹم کے تحت 30 پولنگ سٹیشنز میں 36 ہزار ووٹرز ووٹ ڈالے جانے تھے۔

ہری پور کے حلقہ این اے-19 میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد پانچ لاکھ 77 ہزار 480 ہے۔

پولنگ کے دوران کسی ناخوشگوار واقعے کی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے۔