امن کی بحالی میں کوئی رکاوٹ برداشت نہیں کی جائے گی: نواز شریف

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’ شجاع خانزادہ کی ہلاکت سے مشن رکنے والا نہیں ہے بلکہ پوری قوت سے آگے بڑھے گا‘

وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہا ہے کہ ملک میں امن و امان کی مکمل بحالی تک ذمہ دار ادارے اپنا کام کرتے رہیں اور اس میں کوئی رکاوٹ برداشت نہیں کی جائےگی۔

کراچی میں جمعرات کو جوہری پاور پلانٹ کے توسیع منصوبے کینپ2 اور 3 کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم میاں نواز شریف کا کہنا تھا کہ لوڈشیڈنگ کے علاوہ دہشت گردی کا خاتمہ حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے۔

’نیشنل ایکشن پلان اور آپریشن ضرب عضب کی کارروائیاں کامیابی سے جاری ہیں۔جس کے ردعمل میں دہشت گردوں کی طرف سے بزدلانہ حملے ہو رہے ہیں۔ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کے لیے سرگرم عمل پنجاب کے وزیر داخلہ شجاع خانزادہ کی ہلاکت سے ان کا مشن رکنے والا نہیں ہے بلکہ پوری قوت سے آگے بڑھے گا۔‘

میاں نواز شریف نے متحدہ قومی موومنٹ کے رکن قومی اسمبلی رشید گوڈیل پر حملے کی مذمت کی اور واضح کیا کہ ایسی کارروائیاں دہشت گردی کے خلاف حکومت کے عزم اور عمل کو کمزور نہیں کر سکتیں۔

میاں نواز شریف کا کہنا تھا کہ کینپ 2 اور 3 پر بلاتعطل کام جاری ہے، چشمہ 3 اور چشمہ 4 منصوبے سے اگلے سال 630 میگاواٹ بجلی کی فراہمی شروع ہو جائے گی۔ جس سے لوڈشیڈنگ کے خاتمے میں مدد ملے گی۔

’اب بھی لوڈشیڈنگ کا مسئلہ کسی حد تک موجود ہے، جس سے شہری اور دیہی عوام کچھ نہ کچھ متاثر ہوتے رہتے ہیں۔‘

وزیراعظم نے پاکستان نے جوہری پاور پلانٹس کی حفاظتی اقدامات پر اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کی جانب سے ان حفاظتی انتظامات پر خصوصی توجہ کے ساتھ کڑی نگرانی کی جا رہی ہے تاکہ دنیا کے مروجہ قوانین کے مطابق تمام ایٹمی بجلی گھروں کی سکیورٹی کو یقینی بنایا جا سکے اور ان اقدامات سے انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی آگاہ ہے۔

اسی بارے میں