خیبر پختونخوا: ضلع، تحصیل ناظمین کے انتخابات کے غیر حتمی نتائج

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اتوار کو صوبے کے 23 اضلاع میں ضلع اور تحصیل ناظمین اور نائب ناظمین کا انتخاب ہوا

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات کے آخری مرحلے میں ضلع اور تحصیل ناظمین اور نائب ناظمین کے لیے انتخاب کے غیر سرکاری نتائج کے مطابق حکمران جماعت تحریک انصاف کو صوبے کے نو اضلاع میں کامیابی حاصل ہوئی ہے۔

اتوار کو صوبے کے 23 اضلاع میں ضلع اور تحصیل ناظمین اور نائب ناظمین کا انتخاب ہوا۔ تاہم بنوں میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے حکم پر انتخاب ملتوی کردیا گیا ہے۔

صوبائی دارالحکومت پشاور سے تحریک انصاف کے ارباب عاصم بلا مقابلہ ضلع ناظم منتخب ہوگئے ہیں جبکہ نائب ناظم کی نشست بھی پی ٹی آئی کے حصے میں آئی ہے۔ پشاور کے چار ٹاؤن کونسلوں میں سے تین پر پاکستان تحریک انصاف اور ایک پر مسلم لیگ نواز کو کامیابی ملی ہے۔

ضلع نوشہرہ میں غیرسرکاری اور غیر حتمی نتائج کے مطابق وزیراعلی خیبر پختونخوا پرویز خٹک کے بھائی لیاقت خٹک ضلع ناظم منتخب ہوگئے ہیں جبکہ نائب ناظم کی سیٹ بھی پاکستان تحریک انصاف نے جیت لی ہے۔

اس کے علاوہ چارسدہ ، ڈیرہ اسمعیل خان، ٹانک، کرک، ہری پور، بٹ گرام اور طورغر کے اضلاع میں بھی پی ٹی آئی کے امیدواروں نے میدان مار لیا ہے۔

ریڈیو پاکستان کے مطابق صوبائی حکومت میں شامل مذہبی پارٹی جماعت اسلامی نے دیرپائین، دیر بالا، بونیر اور چترال میں ضلعی نظامت کی نشستیں جیت لی ہیں جبکہ مسلم لیگ نون کو شانگلہ ، مانسہرہ ، ایبٹ آباد اور سوات میں کامیابی حاصل ہوئی ہے۔

پاکستان پیپلزپارٹی کو ملاکنڈ اور لکی مروت میں ضلع ناظم کے سیٹوں پر کامیابی حاصل ہوئی ہے جبکہ قوم پرست جماعت عوامی نیشنل پارٹی دو اضلاع مردان اور صوابی میں ضلعی نظامت کی نشستیں جیتنے میں کامیاب ہوئی ہے۔

غیر سرکاری نتائج کے مطابق کوہاٹ اور ہنگو کے اضلاع میں جمعیت علماء اسلام (ف) کے امیدوار ضلع ناظم کی نشستوں پر منتخب ہوگئے ہیں۔

خیال رہے کہ تین سیاسی جماعتوں عوامی نیشنل پارٹی، پیپلزپارٹی اور جمعیت علماء اسلام (ف) پر مشتمل سہ فریقی اتحاد نے پشاور میں ضلع ناظم اور تین ٹاؤن کونسلوں کے چناؤ کا بائیکاٹ کیا۔ تاہم ٹاؤن فور کےانتخاب میں بھرپور حصہ لیا جہاں سے مسلم لیگ نون اور جے یوآئی کے امیدوار بحثیت ناظم اور نائب ناظم منتخب ہوگئے ہیں۔

اسی بارے میں