’ملکی سلامتی کو لاحق خطرے کا منہ توڑ جواب دیں گے‘

تصویر کے کاپی رائٹ

پاکستان اور بھارت کے درمیان سنہ 1965 میں لڑی گئی جنگ کے پچاس سال مکمل ہونے پر پاکستان میں گولڈن جوبلی تقریبات منائی جا رہی ہیں۔

اتوار کو دن کا آغاز وفاقی دارالحکومت میں 31 اور صوبائی دارالحکومت میں 21 توپوں کی سلامی سے ہوا۔

سنہ 1965 کی جنگ لڑنے والی پاکستان فوج کو خراجِ تحسین پیش کرنے کے لیے صبح 9:29 منٹ پر ملک بھر میں ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔ اس کا مقصد یہ پیغام دینا تھا کہ ملک کے دفاع کے لیے تمام قوم متحد ہے۔

پاکستان کی حکومت کا کہنا ہے کہ پاکستان کو ملک کی مشرقی سرحدوں سے بھارت ایک بار پھر دھمکیاں دے رہا ہے اور ملک میں دہشت گردوں کے خلاف جنگ جاری ہے۔ تناظر میں یومِ دفاع پاکستان انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

پاکستان میں یوم دفاع کی 50 سالہ تقریبات کے موقع پر اسلام آباد میں فضائیہ کے لڑاکا جیٹ طیاروں نے فلائنگ پاسٹ کا مظاہرہ کیا۔ اس تقریب کے موقع پر پاکستان کے صدر ممنون حسین نے کہا کہ پاکستان ایک پرامن ملک ہے اور وہ ہر ملک کے ساتھ دوستانہ تعلقات پر یقین رکھتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ

انھوں نے کہا کہ ’جب بھی کسی نے پاکستان کی آزادی اور پرامن طرز زندگی کو پامال کرنے کی کوشش کی تو پاکستان نے اُس کا منہ توڑ جواب دیا اور اس عزم کا اظہار دہشت گردوں کے خلاف آپریشن ضربِ عضب میں بھی ظاہر ہے۔‘

یوم دفاع کے موقع پر ملک بھر میں تقریبات جاری ہیں اور لاہور کراچی اور کوئٹہ سمیت دیگر شہروں میں عسکری نمائش منعقد کی گئی ہے جس میں بڑی تعداد میں عوام شرکت کر رہی ہے۔

یوم دفاع کے موقع پر پاکستان کے فوجیوں کو خراجِ تحسین پیش کرنے کے لیے فوج کے ہیڈ کوارٹر جی ایچ کیو میں بھی ایک اہم تقریب منعقد کی جا رہی ہے جس میں فوج کے سربراہ راحیل شریف شریک ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ

پاکستانی میڈیا میں ملی نغمات اور 50 سال پہلے لڑی جنگ کے متعلق پروگرام اور سابق فوجیوں کے انٹرویوز دکھائی جا رہے ہیں جبکہ کچھ ایسا ہی سرحد کے دوسری طرف بھارت میں بھی دکھایا جا رہا ہے۔

یاد رہے کہ یہ سب کچھ ایسے وقت ہو رہا ہے جب پاکستان اور بھارت کے درمیان ایک مرتبہ پھر سرحدی تناؤ بڑھ رہا ہے اور دونوں ایک دوسرے پر اسے ہوا دینے کا الزام لگا رہے ہیں۔

اسی بارے میں