پاکستان میں بھارتی مداخلت کے’ثبوت‘اقوامِ متحدہ میں پیش

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان نے اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل کو اپنے ملک میں بھارتی مداخلت کے دستاویزی ثبوت فراہم کر دیے ہیں اور اس الزام کو مسترد کیا ہے کہ پاکستان دہشت گروں کی معاونت کرتا ہے۔

’بات چیت اور دہشت گردی ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے‘

بھارت کے لیے امن کا چار نکاتی ایجنڈا

جمعرات کو نیویارک میں پریس کانفرنس سے خطاب میں پاکستان کے وزیراعظم کے خصوصی مشیر برائے امورِ خارجہ سرتاج عزیز نے کہا کہ بھارت پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث ہے اور اقوامِ متحدہ میں پاکستان کی سفیر ملحیہ لودھی نے اس حوالے سے دستاویزی شواہد سیکریٹری جنرل بان کی مون کو فراہم کیےہیں۔

انھوں نے کہا کہ ان دستاویزات میں بھارت کی پاکستان میں مداخلت خصوصاً کراچی، بلوچستان اور فاٹا میں ہونے والی کارروائیوں میں ملوث ہونے کے ثبوت موجود ہیں۔

وزیراعظم کے مشیر نے دورہ امریکہ میں 15 ممالک کے وزرائے خارجہ کو بھی لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر بھارتی جارحیت سے آگاہ کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی خواہش ہے کہ معاملات کو بات چیت کے ذریعے حل کیا جائے تاہم بھارت دہشت گردی پر زور دیتا ہے۔

انھوں نے دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی کوششوں کا ذکر بھی کیا۔

خیال رہے کہ اقوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنے خطاب میں پاکستان کے وزیراعظم نے بھارت کو امن کے قیام کے لیے چار نکاتی ایجنڈا دیا ہے تاہم بھارت کا کہنا ہے کہ دہشت گردی اور بات چیت ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔

اسی بارے میں