انسانی سمگلنگ میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فرانس میں شدت پسندوں کے حملوں کے بعد پاکستانی وزارتِ داخلہ نے انسانی سمگلنگ میں ملوث افراد کے خلاف کریک ڈون کرنے کا فیصلہ کیا تھا

وفاقی تحقیقاتی ادارے یعنی ایف آئی اے نے ملک بھر میں انسانی سمگلنگ میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی میں جمعرات کو مختلف چھاپوں کے دوران 80 سے زائد افراد کو گرفتار کر کے ان کے قبضے سے پاسپورٹ اور دیگر دستاویزات بھی قبضے میں لے لیں ہیں۔

انسانی سمگلنگ میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی کا حکم

ان چھاپوں کے دوران سب سے زیادہ گرفتاریاں گوجرانوالہ ریجن سے ہوئیں جن کی تعداد 15 ہے۔

گوجرانوالہ ریجن کے اسسٹنٹ ڈائریکڑ چوہدری سرور نے بی بی سی کو بتایا کہ اس ریجن کے تین شہروں گجرات، سیالکوٹ اور منڈی بہاؤ الدین میں چھاپے مار کر پندرہ افراد کو گرفتار کیا۔

انھوں نے بتایا کہ ان میں وہ افراد بھی شامل ہیں جو لوگوں کو یورپی ممالک بھجوانے کے لیے ان کے ساتھ کنسلٹنسی بھی کرتے رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ گرفتار ہونے والے افراد سے دورانِ تفتیش اس کاروبار میں ملوث افراد کے نام بھی سامنے آئے ہیں جو بیرون ممالک بیٹھ کر یہ نیٹ ورک چلا رہے ہیں۔

چوہدری سرور نے کہا کہ ایسے پانچ افراد کی گرفتاری کے لیے انٹرپول کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔

واضح رہے کہ فرانس میں شدت پسندوں کے حملوں کے بعد پاکستانی وزارتِ داخلہ نے انسانی سمگلنگ میں ملوث افراد کے خلاف کریک ڈون کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور اس ضمن میں انسانی سمگلنگ میں ملوث 300 افراد کے پاسپورٹ، شناختی کارڈ اور بینک اکاونٹس منجمد کردیے تھے۔

ایف آئی اے نے لوگوں کو غیر قانونی طور پر باہر بھجوانے کے کاروبار میں ملوث افراد سے متعلق ایک ریڈ بک تیار کی ہے جس میں 300 سے زائد افراد کے نام درج ہیں اور اس حوالے سے اب تک50 افراد کوگرفتار کیا ہے۔

ایف آئی اے حکام کے مطابق اس ریڈ بک میں جن افراد کے نام ہیں ان میں سے اکثریت بیرون ممالک میں مقیم ہیں۔

اسی بارے میں