بنوں میں وفاقی وزیر کے قافلے کے قریب دھماکہ، دو ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اکرم درانی خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ بھی رہ چکے ہیں

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے ضلع بنوں میں وفاقی وزیر اکرم خان درانی کے قافلے قریب بم دھماکہ ہوا ہے۔

جمعرات کو بنوں کے علاقے بکا خیل میں ہونے والے دھماکے میں کم سے کم دو افراد ہلاک اور تین زخمی ہوئے ہیں تاہم وفاقی وزیر ہاوسنگ اکرم خان درانی اس حملے میں محفوظ رہے ہیں۔

بنوں میں طالبان مخالف کمیٹی کا سربراہ ہلاک

مقامی پولیس کے ڈی ایس پی طاہر شاہ کے مطابق اکرم خان درانی بنوں کے مضافات میں نیم قبائلی علاقے کے قریب ہونے والے ایک سیاسی جلسے میں شرکت کرنے کے بعد واپس آ رہے تھے کہ اُن کے قافلے کو بم سے نشانہ بنایا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ بم کچے راستے پر نصب تھا اور دھماکے سے قافلے میں شامل ایمبولینس کو نقصان پہنچا اور ہلاک ہونے والوں میں محکمۂ صحت کا ایک اہلکار بھی شامل ہے۔

انھوں نے بتایا کہ حملے میں ہلاک ہونے والا دوسرا شخص راہ گیر تھا جبکہ زخمی ہونے والے افراد کو طبی امداد کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

واقعے کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کا گھیراؤ کر کے سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے۔

اکرم خان درانی کا تعلق جمعیت علمائے اسلام فضل الرحمان گروپ سے ہے اور وہ اس سے پہلے خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ بھی رہ چکے ہیں۔

خیبر پختونخوا کے ضلع بنوں کی سرحد قبائلی علاقوں سے ملتی ہے اور یہاں اس سے قبل بھی کئی بم دھماکے ہوئے ہیں جن میں سکیورٹی فورسز کو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

اسی بارے میں