’اسلام آباد کے بلدیاتی انتخابات میں مسلم لیگ ن آگے‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption مسلم لیگ ن کے زیادہ تر امیدوار اسلام آباد کے نواحی یا شہر کی حدود میں آنے والے دیہی علاقوں سے کامیاب ہوئے

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد کی تاریخ کے پہلے بلدیاتی انتخابات کے غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق ملک کی حکمران جماعت مسلم لیگ ن کا پلہ بھاری رہا ہے۔

پاکستان کے سرکاری ٹی وی کے مطابق جن 50 یونین کونسلوں میں پیر کو الیکشن ہوا ان میں سے 21 میں مسلم لیگ (ن)، 15 میں حزبِ اختلاف کی جماعت تحریکِ انصاف جبکہ 14 میں آزاد امیدوار چیئرمین منتخب ہوئے ہیں۔

سندھ میں پی پی پی اور پنجاب میں ن لیگ آگے

خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں پی ٹی آئی کی برتری

’ہم چپکے سے جیت جائیں گے‘

جماعتی بنیادوں پر 32 دیہی اور 18 شہری یونین کونسلز میں ہونے والے ان انتخابات میں پاکستان مسلم لیگ ن اور پاکستان تحریکِ انصاف نے بیشتر نشستوں پر یا امیدوار کھڑے کیے یا وہاں دیگر جماعتوں سے اتحاد کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption تحریکِ انصاف کے کامیاب امیدواروں کی اکثریت شہری حلقوں سے منتخب ہوئی ہے

پی ٹی وی پر نشر کیے جانے والے نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کے زیادہ تر امیدوار اسلام آباد کے نواحی یا شہر کی حدود میں آنے والے دیہی علاقوں سے کامیاب ہوئے ہیں۔

اس کے برعکس تحریکِ انصاف کے کامیاب امیدواروں کی اکثریت شہری حلقوں سے منتخب ہوئی ہے۔

اسلام آباد میں بلدیاتی الیکشن کے لیے پولنگ پیر کو صبح سات سے شام ساڑھے پانچ بجے تک بغیر کسی وقفے کے جاری رہی تھی۔

ان انتخابات کے دوران ووٹروں نے 50 یونین کونسلوں کی 650 نشستوں کے لیے میدان میں اترنے والے 2396 امیدواروں میں سے چیئرمین، وائس چیئرمین اور کونسلروں کا انتخاب کیا۔

اس دوران سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے اور پولیس کے علاوہ رینجرز اور فوج کے اہلکار بھی تعینات تھے۔

شہر سے پولنگ کے دوران کسی ناخوشگوار واقعے کی اطلاع نہیں ملی۔

اسی بارے میں