معذوروں کے عالمی دن پر کوئٹہ پریس کلب کے باہر احتجاج

Image caption جہانگیر کاکڑ کے مطابق ان کی تنظیم بلوچستان کے 22 اضلاع میں اس دن کو یوم سیاہ کے طور پر منا رہی ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں جسمانی طور پر معذور افراد کے عالمی دن کے موقعے پر کوئٹہ میں ایک واک کا اہتمام کیا گیا جبکہ انجمن معذوران بلوچستان نے اس دن کو یوم سیاہ کے طور پرمنایا۔

واک کا اہتمام کوئٹہ چھاؤنی میں کیا گیا جس میں پاکستانی فوج کی 41ڈویژن کے جنرل آفیسر کمانڈنگ میجر جنرل آفتاب نے بھی شرکت کی۔واک کے علاوہ اس دن کے حوالے سے ایک تقریب کا بھی انعقاد کیا گیا جس میں بچوں نے خاکے بھی پیش کیے۔

نجمن معذوران بلوچستان تنظیم کے زیر اہتمام کوئٹہ پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ منعقد کیا گیا۔ مظاہرے کے شرکاء نےہاتھوں میں چارٹ اٹھا رکھے تھے جن پر یہ مطالبات درج تھے کہ معذور افراد کو جینے کا حق دیا جائے اور سرکاری ملازمتوں میں مختص ان کے کوٹے پر عملدرآمد کیا جائے۔

مظاہرے کے شرکاء سے انجمن معذوران بلوچستان کے صدر جہانگیر خان کاکڑ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’اس دن کو منانے کا مقصد معذور افراد کو معاشرے میں بطور انسان ان کا جائز مقام دلانے کے لیے شعور اجاگر کرنا ہے لیکن یہ امر افسوسناک ہے کہ انھیں جائز مقام نہیں دیا جارہا۔‘

انھوں نے بتایا کہ اسی وجہ سے ان کی تنظیم بلوچستان کے 22 اضلاع میں اس دن کو یوم سیاہ کے طور پر منا رہی ہے۔

جہانگیر کا کڑ کا کہنا تھا کہ قوم پرستوں کی حکومت نے بھی ان کا حق نہیں دیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’قوم پرستوں کی حکومت آنے پر انھوں نے خوشی میں مٹھائی کھائی لیکن قوم پرستوں نے ان کو مٹی دی۔‘

انجمن معذوران بلوچستان کے صدر نے بتایا کہ معذور افراد کے مسائل کے حل اور ان کی مدد کے لیے مختلف ادارے تو قائم ہیں مگر یہ ادارے ان کے مسائل حل کرنے کی بجائے انھیں ڈاکٹروں کی طرح صرف مشورے دیتے ہیں۔

اسی بارے میں