اسلام آباد میں افغانستان پر سہ فریقی کانفرنس کا انعقاد

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہارٹ آف ایشیا کا مقصد خطے میں امن، انسانی اقدار اور علاقائی تعاون کو فروغ دینا ہے

پاکستان کے دارالحکومت ہارٹ آف ایشیا کانفرنس کے موقع پر افغانستان، امریکہ اور یورپی یونین کے درمیان علیحدہ مذاکرات میں افغانستان میں قیام امن اور اقتصادی ترقی کے لیے آئندہ برس دو مزید بین الاقوامی کانفرنسیں منعقد کرانے کا فیصلہ کیاگیا۔

پہلی کانفرنس یورپی یونین چاراور پانچ اکتوبر 2016 کو برسلز میں کرآئے گا۔

ہارٹ آف ایشیا کانفرنس کے موقع پر افغانستان، یورپی یونین اور امریکہ کی ایک علیحدہ سہ فریقی کانفرنس بھی ہوئی جس میں افغانستان کی نمائندگی وزیر خارجہ صلاح الدین ربانی نے کی جبکہ امریکہ کی طرف سے نائب وزیر خارجہ اینٹونی جے بلنکن اور یورپی یونین کے بیرونی ایکشن سروس کی نائب سیکرٹری جنرل ہیلگا شمد نے اپنے اپنے وفود کی قیادت کی۔

اسلام آباد میں سفارت کاری کی تصاویر

قندھار جھڑپوں میں ’46 افراد ہلاک‘

افغانستان، امریکہ اور یورپی یونین نے کانفرنس کے بعد اپنے مشترکہ اعلامیے میں کہا ہے کہ انھوں نے اس کانفرنس میں دو دیگر کانفرنسوں کے بارے میں گفتگو کی جو خطے کی سلامتی اور اقتصادی ترقی پر مبنی ہونگی۔

یورپی یونین نے اعلان کیا ہے کو وہ ان کانفرنسوں کی میزبانی برسلز اور وارسا میں کرے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption افغانستان کے وزیر خارجہ صلاح الدین ربانی نے پاکستانی ہم منصب کے ساتھ ہارٹ آف ایشیا کانفرنس کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ دہشت گردی کا سامنا پورے خطے کو ہے اس لیے مشترکہ سکیورٹی حکمت عملی اور انسداد دہشت گردی سٹیریٹیجی پر پر زور دیا گیا ہے

امریکہ، یورپی یونین اور افغانستان نے یہ بھی کہا کہ برسلز کانفرنس کی تیاریوں میں انھوں نے ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

تینوں اطراف نے تسلیم کیا کہ افغانستان کی حمایت میں برسلز اور وارسا کی کانفرنسیں ملک کے لیے اس وقت اہم ہیں جب وہ اپنے اصلاحات اور ایجنڈا میں پیش قدمی کرنے جا رہا ہے۔

انھوں نے یہ بھی کہا کہ اگر افغانستان اپنی اصلاحات میں پیش رفت کرتا ہے تو یورپی یونین برسلز اور وارسا کی کانفرنسوں میں ملک کو غیر معمولی حفاظتی نظام اور ترقیاتی امداد فراہم کرنے کے وعدے کرے گا۔

تمام ممالک کے وفود نے کہا ہے کہ ان دونوں کانفرنسوں کو منعقد کرنے کے لیے ایک مضبوط افغان قیادت کی منصوبہ بندی ہونا بہت اہم ہے۔

انھوں نے کانفرنسوں کے سلسلے میں تمام بین الاقوامی شراکت داروں سے درخواست کی کہ وہ افغانستان کو مضبوط حمایت فراہم کرنے کا عہد کریں۔

ہارٹ آف ایشیا کانفرنس کا مقصد خطے کے شراکت داروں کو ایک دوسرے سے مل کرعام چیلنجز سے نمٹنے اور باہم مفید کے حل تک پہنچنے کے مواقع دینا ہے۔

اسی بارے میں