تصادم کے بعد ویگن میں آگ لگنے سے 12 مسافر ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پولیس اہلکار کے مطابق آگ لگنے سے مرنے والے افراد کی لاشیں بری طرح جھلس گئی ہیں

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے ضلع کرک میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک مسافر گاڑی کا گیس سلنڈر پھٹنے سے اس پر سوار کم از کم 12 مسافر ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

ہلاک ہونے والوں میں پانچ خواتین اور پانچ بچے بھی شامل ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ اتوار کی شام انڈس ہائی وے پر الوڑگے کے مقام پر دو گاڑیوں کے درمیان تصادم کے نتیجے میں پیش آیا۔

جائے وقوعہ پر موجود کرک پولیس کے ایک اہلکار محمد اصغر نے بی بی سی کو بتایا کہ تیزرفتاری کے باعث ہائی وے پر ایک پجیرو گاڑی مخالف سمت سے آنے والی ہائی ایس ویگن سے ٹکرا گئی جس کے بعد دھماکہ ہوا۔

انھوں نے کہا کہ تصادم سے ویگن کا سی این جی سیلنڈر پھٹ گیا اور گاڑی میں آگ لگ گئی۔

اہلکار نے بتایا کہ حادثے میں اب تک 12 افراد کی ہلاکت کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ چھ افراد زخمی ہیں جن میں چار کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption انڈس ہائی وے پر تیز رفتاری کے باعث اکثر اوقات حادثات پیش آتے رہے ہیں

زخمیوں کو کوہاٹ کے ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے۔

پولیس اہلکار کے مطابق آگ لگنے سے مرنے والے افراد کی لاشیں بری طرح جھلس گئی ہیں جس سے ان کی شناخت میں بھی مشکلات پیش آ رہی ہیں۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ مرنے والے افراد کا تعلق کرک ضلع سے بتایا جاتا ہے تاہم سرکاری طورہر ابھی تک اس بات کی تصدیق نہیں کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ انڈس ہائی وے کراچی جانے کےلیے ایک اہم شاہراہ سمجھی جاتی ہے تاہم تیز رفتاری کے باعث اس شاہراہ پر اکثر اوقات حادثات پیش آتے رہے ہیں جس میں قیمتی جانیں ضائع ہوتی رہی ہیں۔

اسی بارے میں