شمالی وزیرستان: امریکی ڈرون حملے میں چار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption امریکی جاسوس طیارے کا یہ اس سال کا پہلا حملہ ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان ایجنسی میں حکام کے مطابق امریکی جاسوس طیارے کے حملے میں چار افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

ڈرون حملہ آج صبح شوال کے علاقے منگریتئی کے مقام پر کیا گیا ۔ سرکاری ذرائع کا کہنا تھا کہ امریکی جاسوس طیارے نے ایک مکان پر دو میزائل داغے جس سے چار افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ ایسی اطلاعات ہیں کہ ہلاک ہونے والے افراد میں طالبان کمانڈر بھی شامل ہیں لیکن سرکاری سطح پر اس کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

پاکستان میں ڈرون حملوں میں ڈرامائی کمی

امریکی جاسوس طیارے کا یہ اس سال کا پہلا حملہ ہے جو شمالی وزیرستان ایجنسی میں کیا گیا ہے ۔ گزشتہ سال امریکی جاسوس طیارے نے شمالی وزیرستان میں تیرہ حملے کیے تھے جو سال دو ہزار چودہ کی نسبت نصف تھے۔

یہاں ان دنوں ایسی خبریں سامنے آئی ہیں کہ امریکی جاسوس طیاروں کے حملوں میں ڈرامائی کمی واقع ہوئی ہے ۔ سال 2010 میں امریکی جاسوس طیاروں نے ایک سو تیس کے لگ بھگ حملے کیے تھے جن سے بڑی تعداد میں جانی نقصانات ہوئے تھے۔

شمالی وزیرستان میں پاکستان فوج نے جون 2014 میں شدت پسندوں کے خلاف آپریشن ضرب عضب شروع کیا تھا جس میں حکام کے مطابق ایجنسی کا بڑا حصہ اب شدت پسندوں سے صاف کر دیا گیا ہے ۔

اس آپریشن کے نتیجے میں لاکھوں افراد نقل مکانی پر مجبور ہوئے گزشتہ سال مارچ سے ان کی واپسی کا سلسلہ تو شروع کیا گیا لیکن یہ سلسلہ انتہائی سست روی سے جاری ہے ۔

دوسری جانب آج پشاور میں کوہاٹ روڈ پر نا معلوم افراد نے پولیس کے رائیڈر سکواڈ پر فائرنگ کی ہے ۔ بال ماڑی پولیس تھانے کے اہلکار نور زیب نے بتایا کہ اہلکار معمول کی گشت پر تھے کہ کوہاٹ روڈ پر اوور ہیڈ بریج کے پاس نا معلوم پیدل افراد نے ان پر فائرنگ کی اور موقع سے فرار ہو گئے ۔ اس واقعے میں سپاہی صفت ہلاک جبلکہ سپاہی نور ولی زخمی ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں